القرآن الحکیم (اردو ترجمہ)

حضرت شاہ عبدالقادر

سورۃ الزخرف

Previous           Index           Next

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

 

حمٓ 

  حٰم۔

.1

وَٱلۡكِتَـٰبِ ٱلۡمُبِينِ 

  قَسم ہے اس کتاب واضح کی۔

.2

إِنَّا جَعَلۡنَـٰهُ قُرۡءَٲنًا عَرَبِيًّ۬ا لَّعَلَّڪُمۡ تَعۡقِلُونَ 

  ہم نے رکھا اس کو قرآن عربی زبان کا، شاید تم بوجھو (سمجھو) ۔

.3

وَإِنَّهُ ۥ فِىٓ أُمِّ ٱلۡكِتَـٰبِ لَدَيۡنَا لَعَلِىٌّ حَكِيمٌ 

  اور یہ بڑی کتاب میں ہم پاس ہے اونچا محکم (حکمت سے بھرپور) ۔

.4

أَفَنَضۡرِبُ عَنكُمُ ٱلذِّڪۡرَ صَفۡحًا أَن ڪُنتُمۡ قَوۡمً۬ا مُّسۡرِفِينَ 

کیا پھیر (چھوڑ) دیں گے ہم تمہاری طرف (بھیجنا) سے یہ سمجھوتی موڑ کر،

اس سے کہ تم ہو لوگ جو حد پر نہیں رہتے۔

.5

وَكَمۡ أَرۡسَلۡنَا مِن نَّبِىٍّ۬ فِى ٱلۡأَوَّلِينَ 

  اور بہت بھیجے ہیں ہم نے نبی پہلوں میں۔

.6

وَمَا يَأۡتِيهِم مِّن نَّبِىٍّ إِلَّا كَانُواْ بِهِۦ يَسۡتَہۡزِءُونَ 

  اور نہیں آتا لوگوں کو کوئی پیغام لانے والے جس سے ٹھٹھا (مذاق) نہیں کرتے۔

.7

فَأَهۡلَكۡنَآ أَشَدَّ مِنۡہُم بَطۡشً۬ا وَمَضَىٰ مَثَلُ ٱلۡأَوَّلِينَ 

پھر کھپا (ہلاک کر) دیئے ہم نے اُن سے سخت زور والے، اور چلی آئی ہے حقیقت (مثال) پہلوں کی۔

.8

وَلَٮِٕن سَأَلۡتَهُم مَّنۡ خَلَقَ ٱلسَّمَـٰوَٲتِ وَٱلۡأَرۡضَ

  اور اگر تو ان سے پوچھے، کس نے بنائے آسمان و زمین؟

لَيَقُولُنَّ خَلَقَهُنَّ ٱلۡعَزِيزُ ٱلۡعَلِيمُ 

تو کہیں بنائے اس زبردست خبردار نے۔

.9

ٱلَّذِى جَعَلَ لَڪُمُ ٱلۡأَرۡضَ مَهۡدً۬اوَجَعَلَ لَكُمۡ فِيہَا سُبُلاً۬ لَّعَلَّكُمۡ تَهۡتَدُونَ 

  وہی ہے جس نے بنا دی تم کو زمین بچھونا، اور رکھ دیں تم کو اس میں راہیں شاید تم راہ پاؤ۔

.10

وَٱلَّذِى نَزَّلَ مِنَ ٱلسَّمَآءِ مَآءَۢ بِقَدَرٍ۬فَأَنشَرۡنَا بِهِۦ بَلۡدَةً۬ مَّيۡتً۬ا‌ۚ

  اور جس نے اُتارا آسمان سے پانی ماپ کر(خاص مقدار میں) ، پھر اُبھارا (زندہ کیا) ہم نے اس سے ایک دیس مُردہ۔

كَذَٲلِكَ تُخۡرَجُونَ   

اسی طرح تم کو نکالیں گے۔

.11

وَٱلَّذِى خَلَقَ ٱلۡأَزۡوَٲجَ كُلَّهَا

  اور جس نے بنائے سب چیز کے جوڑے،

وَجَعَلَ لَكُم مِّنَ ٱلۡفُلۡكِ وَٱلۡأَنۡعَـٰمِ مَا تَرۡكَبُونَ   

اور بنا دیئے تم کو چوپائے اور کشتی، جس پر سوار ہوتے ہو۔

.12

لِتَسۡتَوُ ۥاْ عَلَىٰ ظُهُورِهِۦثُمَّ تَذۡكُرُواْ نِعۡمَةَ رَبِّكُمۡ إِذَا ٱسۡتَوَيۡتُمۡ عَلَيۡهِ وَتَقُولُواْ

  تا(کہ) چڑھ بیٹھو اس کی پیٹھ پر، پھر یاد کرو اپنے رب کا احسان، جب بیٹھ چکو اس پر، اور کہو

سُبۡحَـٰنَ ٱلَّذِى سَخَّرَ لَنَا هَـٰذَا وَمَا ڪُنَّا لَهُ ۥ مُقۡرِنِينَ   

پاک ذات ہے وہ جس نے بس میں دیا ہمارے یہ، اور ہم نہ تھے اس کے مقابل ہونے والے۔

.13

وَإِنَّآ إِلَىٰ رَبِّنَا لَمُنقَلِبُونَ 

  اور ہم کو اپنے رب کی طرف پھر جانا ہے۔

.14

وَجَعَلُواْ لَهُ ۥ مِنۡ عِبَادِهِۦ جُزۡءًا‌ۚ

  اور ٹھہرائی ہے انہوں نے اس کو اولاد اس کے بندوں سے۔

إِنَّ ٱلۡإِنسَـٰنَ لَكَفُورٌ۬ مُّبِينٌ 

تحقیق(حقیقت میں) انسان بڑا نا شکر ہے صریح(کھلا احسان فراموش) ۔

.15

أَمِ ٱتَّخَذَ مِمَّا يَخۡلُقُ بَنَاتٍ۬ وَأَصۡفَٮٰكُم بِٱلۡبَنِينَ   

   کیا رکھ لیں اپنی پیدائش میں سے بیٹیاں اور تم کو دیئے چُن کر بیٹے؟

.16

وَإِذَا بُشِّرَ أَحَدُهُم بِمَا ضَرَبَ لِلرَّحۡمَـٰنِ مَثَلاً۬ ظَلَّ وَجۡهُهُ ۥ مُسۡوَدًّ۬ا وَهُوَ كَظِيمٌ   

جب ان میں سے کسی کو خوشخبری ملے اس چیز کی جو رحمٰن پر نام دھرا،

سارے دن رہے اسکامنہ سیاہ اور وہ دل میں گھُٹ رہا۔

.17

أَوَمَن يُنَشَّؤُاْ فِى ٱلۡحِلۡيَةِ وَهُوَ فِى ٱلۡخِصَامِ غَيۡرُ مُبِينٍ۬ 

  اور(کیا) ایسا شخص کہ پلتا رہے گہنے (زیورات) میں، اور جھگڑے میں بات نہ کہہ سکے۔

.18

وَجَعَلُواْ ٱلۡمَلَـٰٓٮِٕكَةَ ٱلَّذِينَ هُمۡ عِبَـٰدُ ٱلرَّحۡمَـٰنِ إِنَـٰثًا‌ۚ

  اورٹھہرایا فرشتوں کو جو بندے ہیں رحمٰن کے، عورت۔

أَشَهِدُواْ خَلۡقَهُمۡ‌ۚ

کیا دیکھتے تھے ان کا بننا(پیدا ہونا) ؟

سَتُكۡتَبُ شَهَـٰدَتُہُمۡ وَيُسۡـَٔلُونَ   

اب لکھ رکھیں گے اُن کی گواہی، اور ان سے پوچھ ہو گی۔

.19

وَقَالُواْ لَوۡ شَآءَ ٱلرَّحۡمَـٰنُ مَا عَبَدۡنَـٰهُم‌ۗ

  اور کہتے ہیں ، اگر چاہتا رحمٰن توہم نہ پوجتے ان کو۔

مَّا لَهُم بِذَٲلِكَ مِنۡ عِلۡمٍ‌ۖ

کچھ خبر نہیں ان کو اس کی۔

إِنۡ هُمۡ إِلَّا يَخۡرُصُونَ 

یہ سب اٹکلیں (گمان) دوڑاتے ہیں۔

.20

أَمۡ ءَاتَيۡنَـٰهُمۡ ڪِتَـٰبً۬ا مِّن قَبۡلِهِۦ فَهُم بِهِۦ مُسۡتَمۡسِكُونَ   

   کیا ہم نے کوئی کتاب دی ہے ان کو اس سے پہلے؟ سو یہ اس پر مضبوط ہیں۔

.21

بَلۡ قَالُوٓاْ إِنَّا وَجَدۡنَآ ءَابَآءَنَا عَلَىٰٓ أُمَّةٍ۬ وَإِنَّا عَلَىٰٓ ءَاثَـٰرِهِم مُّهۡتَدُونَ   

  بلکہ کہتے ہیں ہم نے پائے اپنے باپ دادے ایک راہ پر، اور ہم انہی کے قدموں پر ہیں راہ پائے۔

.22

وَكَذَٲلِكَ مَآ أَرۡسَلۡنَا مِن قَبۡلِكَ فِى قَرۡيَةٍ۬ مِّن نَّذِيرٍإِلَّا قَالَ مُتۡرَفُوهَآ

  اور اسی طرح بھیجا ہم نے تجھ سے پہلے ڈر سنانے والا کسی گاؤں میں،سو کہنے لگے وہاں کے آسودہ لوگ،

إِنَّا وَجَدۡنَآ ءَابَآءَنَا عَلَىٰٓ أُمَّةٍ۬ وَإِنَّا عَلَىٰٓ ءَاثَـٰرِهِم مُّقۡتَدُونَ   

ہم نے پائے اپنے باپ دادے ایک راہ پر،اور ہم انہی کے قدموں پر چلتے ہیں۔

.23

قَـٰلَ أَوَلَوۡ جِئۡتُكُم بِأَهۡدَىٰ مِمَّا وَجَدتُّمۡ عَلَيۡهِ ءَابَآءَكُمۡ‌ۖ

وہ بولا، اور جو میں لا دوں تم کو اس سے زیادہ سوجھ کی راہ، جس پر تم نے پائے اپنے باپ دادے ،تو بھی

قَالُوٓاْ إِنَّا بِمَآ أُرۡسِلۡتُم بِهِۦ كَـٰفِرُونَ   

کہنے لگے، ہم کو تمہارے ہاتھ بھیجا (دین) نہ ماننا۔

.24

فَٱنتَقَمۡنَا مِنۡہُمۡ‌ۖ

  پھر ہم نے ان سے بدلہ لیا،

فَٱنظُرۡ كَيۡفَ كَانَ عَـٰقِبَةُ ٱلۡمُكَذِّبِينَ   

سو دیکھ آخر کیسا ہوا جھٹلانے والوں کا؟

.25

وَإِذۡ قَالَ إِبۡرَٲهِيمُ لِأَبِيهِ وَقَوۡمِهِۦۤ

  اور جب کہا ابراہیم نے اپنے باپ کو، اور اس کی قوم کو،

إِنَّنِى بَرَآءٌ۬ مِّمَّا تَعۡبُدُونَ   

میں الگ ہوں ان چیزوں سے جن کو پوجتے ہو۔

.26

إِلَّا ٱلَّذِى فَطَرَنِى فَإِنَّهُ ۥ سَيَہۡدِينِ 

  مگر جس نے مجھ کو بنایا (پیدا کیا)، سو وہ مجھ کو راہ دے گا۔

.27

وَجَعَلَهَا كَلِمَةَۢ بَاقِيَةً۬ فِى عَقِبِهِۦ لَعَلَّهُمۡ يَرۡجِعُونَ 

  اور یہی بات پیچھے چھوڑ گیا اپنی اولاد میں، شاید وہ رجوع رہیں۔

.28

بَلۡ مَتَّعۡتُ هَـٰٓؤُلَآءِ وَءَابَآءَهُمۡ حَتَّىٰ جَآءَهُمُ ٱلۡحَقُّ وَرَسُولٌ۬ مُّبِينٌ۬ 

کوئی نہیں! پر میں نے برتنے دیا ان کو، اور ان کے باپ دادوں کو،

یہاں تک کہ پہنچا انکودین سچا، اور رسول کھول سنانے والا۔

.29

وَلَمَّا جَآءَهُمُ ٱلۡحَقُّ قَالُواْ هَـٰذَا سِحۡرٌ۬ وَإِنَّا بِهِۦ كَـٰفِرُونَ   

  اور جب پہنچا ان کو سچا دین کہنے لگے، یہ جادو ہے اور ہم نہ مانیں گے۔

.30

وَقَالُواْ لَوۡلَا نُزِّلَ هَـٰذَا ٱلۡقُرۡءَانُ عَلَىٰ رَجُلٍ۬ مِّنَ ٱلۡقَرۡيَتَيۡنِ عَظِيمٍ 

  اور کہتے ہیں، کیوں نہ اُترا یہ قرآن کسی بڑے مرد پر ان دو بستیوں کے۔

.31

أَهُمۡ يَقۡسِمُونَ رَحۡمَتَ رَبِّكَ‌ۚ

   کیا وہ بانٹتے ہیں تیرے رب کی مِہر(رحمت) ؟

نَحۡنُ قَسَمۡنَا بَيۡنَہُم مَّعِيشَتَہُمۡ فِى ٱلۡحَيَوٰةِ ٱلدُّنۡيَا‌ۚ

ہم نے بانٹی ہے ان میں روزی ان کی، دُنیا کے جیتے،

وَرَفَعۡنَا بَعۡضَہُمۡ فَوۡقَ بَعۡضٍ۬ دَرَجَـٰتٍ۬ لِّيَتَّخِذَ بَعۡضُہُم بَعۡضً۬ا سُخۡرِيًّ۬ا‌ۗ

اور اونچے کئے درجے ایک کے ایک سے کہ ٹھہراتا ہے ایک دوسرے کو کمیرا(خدمت گار) ۔

وَرَحۡمَتُ رَبِّكَ خَيۡرٌ۬ مِّمَّا يَجۡمَعُونَ   

اور تیرے رب کی مِہر (رحمت) بہتر ہے ان چیزوں سے جو سمیٹتے (جمع کرتے) ہیں ۔

.32

وَلَوۡلَآ أَن يَكُونَ ٱلنَّاسُ أُمَّةً۬ وَٲحِدَةً۬ لَّجَعَلۡنَا لِمَن يَكۡفُرُ بِٱلرَّحۡمَـٰنِ

  اور اگر یہ نہ ہوتاکہ لوگ ہو جائیں ایک (ہی) دین پر، تو ہم دیتے ان کو جو منکر ہیں رحمٰن سے،

لِبُيُوتِہِمۡ سُقُفً۬ا مِّن فِضَّةٍ۬ وَمَعَارِجَ عَلَيۡہَا يَظۡهَرُونَ  

ان کے گھروں کو چھت روپے (چاندی کی) کے، اور سیڑھیاں جن پر چڑھیں۔

.33

وَلِبُيُوتِہِمۡ أَبۡوَٲبً۬ا وَسُرُرًا عَلَيۡہَا يَتَّكِـُٔونَ   

  اور ان کے گھروں کو دروازے اور تخت، جن پر لگ (تکیہ لگا کر) بیٹھیں۔

.34

وَزُخۡرُفً۬ا‌ۚ

  اور سونے کے۔

وَإِن ڪُلُّ ذَٲلِكَ لَمَّا مَتَـٰعُ ٱلۡحَيَوٰةِ ٱلدُّنۡيَا‌ۚ

اور یہ سب کچھ نہیں، مگر برتنا دنیا کے جیتے۔

وَٱلۡأَخِرَةُ عِندَ رَبِّكَ لِلۡمُتَّقِينَ 

اور پچھلا گھر تیرے رب کے ہاں انہیں کو ہے جو ڈر رکھیں۔

.35

وَمَن يَعۡشُ عَن ذِكۡرِ ٱلرَّحۡمَـٰنِ نُقَيِّضۡ لَهُ ۥ شَيۡطَـٰنً۬ا فَهُوَ لَهُ ۥ قَرِينٌ۬   

اور جو کوئی آنکھیں چرائے رحمٰن کی یاد سے، ہم اس پر تعین کریں ایک شیطان پھر وہ رہے اسکا ساتھی۔

.36

وَإِنَّہُمۡ لَيَصُدُّونَہُمۡ عَنِ ٱلسَّبِيلِ وَيَحۡسَبُونَ أَنَّہُم مُّهۡتَدُونَ 

  اور وہ اس کو روکتے ہیں راہ سے، اور یہ سمجھتے ہیں کہ ہم راہ پر ہیں۔

.37

حَتَّىٰٓ إِذَا جَآءَنَا قَالَ يَـٰلَيۡتَ بَيۡنِى وَبَيۡنَكَ بُعۡدَ ٱلۡمَشۡرِقَيۡنِ

  یہاں تک جب آئے ہم پاس، کہے، کسی طرے مجھ میں اور تجھ میں فرق ہو مشرق مغرب کا سا،

فَبِئۡسَ ٱلۡقَرِينُ  

کہ تو برا ساتھی ہے۔

.38

وَلَن يَنفَعَڪُمُ ٱلۡيَوۡمَ إِذ ظَّلَمۡتُمۡ أَنَّكُمۡ فِى ٱلۡعَذَابِ مُشۡتَرِكُونَ 

(کہا جائے گا ان سے)

اور کچھ فائدہ نہیں تم کو آج کے دن جب تم ظالم ٹھہرے، اس سے کہ تم مار (عذاب) میں شامل ہو۔

.39

أَفَأَنتَ تُسۡمِعُ ٱلصُّمَّ

  سو کیا تو سنائے گا، بہروں کو؟

أَوۡ تَہۡدِى ٱلۡعُمۡىَ

یا سجھائے گا اندھوں کو؟

وَمَن كَانَ فِى ضَلَـٰلٍ۬ مُّبِينٍ۬ 

اور صریح غلطی میں بھٹکتوں کو؟

.40

فَإِمَّا نَذۡهَبَنَّ بِكَ فَإِنَّا مِنۡہُم مُّنتَقِمُونَ   

 پھر اگر کبھی ہم تجھ کو لے گئے، تو ہم کو ان سے بدلہ لینا۔

.41

أَوۡ نُرِيَنَّكَ ٱلَّذِى وَعَدۡنَـٰهُمۡ

  یا تجھ کو دکھائیں جو ان کو وعدہ دیا ہے

فَإِنَّا عَلَيۡہِم مُّقۡتَدِرُونَ   

تو یہ ہمارے بس میں ہیں۔

.42

فَٱسۡتَمۡسِكۡ بِٱلَّذِىٓ أُوحِىَ إِلَيۡكَ‌ۖ

  سو تو مضبوط رہ اسی پر، جو تجھ کو حکم آیا۔

إِنَّكَ عَلَىٰ صِرَٲطٍ۬ مُّسۡتَقِيمٍ۬   

تو ہے بیشک سیدھی راہ پر۔

.43

وَإِنَّهُ ۥ لَذِكۡرٌ۬ لَّكَ وَلِقَوۡمِكَ‌ۖ

  اور یہ مذکور رہے گا تیرا، اور تیری قوم کا

وَسَوۡفَ تُسۡـَٔلُونَ

اور آگے(لوگو!) تم سے پُوچھ ہو گی۔

.44

وَسۡـَٔلۡ مَنۡ أَرۡسَلۡنَا مِن قَبۡلِكَ مِن رُّسُلِنَآ

  اور پوچھ دیکھ جو رسول بھیجے ہم نے تجھ سے پہلے۔

أَجَعَلۡنَا مِن دُونِ ٱلرَّحۡمَـٰنِ ءَالِهَةً۬ يُعۡبَدُونَ 

(کیا) کبھی ہم نے رکھے ہیں رحمٰن کے سوا اور حاکم، کہ پوجے جائیں۔

.45

وَلَقَدۡ أَرۡسَلۡنَا مُوسَىٰ بِـَٔايَـٰتِنَآ إِلَىٰ فِرۡعَوۡنَ وَمَلَإِيْهِۦ

  اور ہم نے بھیجا موسیٰ اپنی نشانیاں دے کر، فرعون اور اس کے سرداروں پاس،

فَقَالَ إِنِّى رَسُولُ رَبِّ ٱلۡعَـٰلَمِينَ   

تو کہا، میں بھیجا ہوں جہان کے صاحب کا۔

.46

فَلَمَّا جَآءَهُم بِـَٔايَـٰتِنَآ إِذَا هُم مِّنۡہَا يَضۡحَكُونَ 

  پھر جب لایا ان پاس ہماری نشانیں وہ تو لگے ان پر ہنسنے۔

.47

وَمَا نُرِيهِم مِّنۡ ءَايَةٍ إِلَّا هِىَ أَڪۡبَرُ مِنۡ أُخۡتِهَا‌ۖ

  اور جو دکھاتے گئے ہم ان کو نشانی، سو دوسری سے بڑی۔

وَأَخَذۡنَـٰهُم بِٱلۡعَذَابِ لَعَلَّهُمۡ يَرۡجِعُونَ   

اور پکڑا ہم نے ان کو تکلیف میں، شاید وہ باز آئیں۔

.48

وَقَالُواْ يَـٰٓأَيُّهَ ٱلسَّاحِرُ

  اور (جب بھی عذاب آتا) کہنے لگے اے جادوگر!

ٱدۡعُ لَنَا رَبَّكَ بِمَا عَهِدَ عِندَكَ إِنَّنَا لَمُهۡتَدُونَ   

پکار ہمارے واسطے اپنے رب کو جیسا سکھا رکھا ہے تجھ کو ہم مقرر راہ پر آئیں گے۔

.49

فَلَمَّا كَشَفۡنَا عَنۡہُمُ ٱلۡعَذَابَ إِذَا هُمۡ يَنكُثُونَ 

  پھر جب اٹھا لی ہم نے ان پر سے تکلیف، تبھی وہ وعدہ توڑ ڈالتے۔

.50

وَنَادَىٰ فِرۡعَوۡنُ فِى قَوۡمِهِۦ قَالَ يَـٰقَوۡمِ

  اور پکارا فرعون اپنی قوم میں، بولا،

أَلَيۡسَ لِى مُلۡكُ مِصۡرَ

 اے قوم میری!بھلا مجھ کو نہیں حکومت مصر کی؟

وَهَـٰذِهِ ٱلۡأَنۡهَـٰرُ تَجۡرِى مِن تَحۡتِىٓ‌ۖ

 اور یہ نہریں چلتی ہیں میرے (محل کے) نیچے؟

أَفَلَا تُبۡصِرُونَ   

کیا تم نہیں دیکھتے؟

.51

أَمۡ أَنَا۟ خَيۡرٌ۬ مِّنۡ هَـٰذَا ٱلَّذِى هُوَ مَهِينٌ۬ وَلَا يَكَادُ يُبِينُ 

  بھلا میں ہوں بہتر اس شخص سے جس کو عزت نہیں  اور صاف نہیں بول سکتا؟

.52

فَلَوۡلَآ أُلۡقِىَ عَلَيۡهِ أَسۡوِرَةٌ۬ مِّن ذَهَبٍ

  پھر کیوں نہ آ پڑے (اتارے) اس پر کنگن سونے کے،

أَوۡ جَآءَ مَعَهُ ٱلۡمَلَـٰٓٮِٕڪَةُ مُقۡتَرِنِينَ   

یا آتے اس کے ساتھ فرشتے پرا باندھ کر۔

.53

فَٱسۡتَخَفَّ قَوۡمَهُ ۥ فَأَطَاعُوهُ‌ۚ

  پھر عقل کھو دی اپنی قوم کی پھر اسی کو کہا مانا۔

إِنَّهُمۡ كَانُواْ قَوۡمً۬ا فَـٰسِقِينَ   

مقرر (بیشک) وہ تھے لوگ بے حکم۔

.54

فَلَمَّآ ءَاسَفُونَا ٱنتَقَمۡنَا مِنۡهُمۡ فَأَغۡرَقۡنَـٰهُمۡ أَجۡمَعِينَ 

  پھر جب ہم کو بھی جھونجھل (غضب) دلائی، تو ہم نے ان سے بدلہ لیا، پھر ڈبو دیا ان سب کو۔

.55

فَجَعَلۡنَـٰهُمۡ سَلَفً۬ا وَمَثَلاً۬ لِّلۡأَخِرِينَ

پھر کر ڈالا ان کو گئے گذرے اور کہاوت (عبرت، مثال) پچھلوں کے واسطے۔

.56

وَلَمَّا ضُرِبَ ٱبۡنُ مَرۡيَمَ مَثَلاً إِذَا قَوۡمُكَ مِنۡهُ يَصِدُّونَ 

  اور جب کہاوت (مثال) لائیے مریم کے بیٹے کی، تو تبھی قوم تیری لگتے ہیں اس سے چلانے۔

.57

وَقَالُوٓاْ ءَأَٲلِهَتُنَا خَيۡرٌ أَمۡ هُوَ‌ۚ

  اور کہتے ہیں، ہمارے ٹھاکر (معبود) بہتر ہیں یا وہ (عیسیٰ)؟

مَا ضَرَبُوهُ لَكَ إِلَّا جَدَلاَۢ‌ۚ

یہ نام جو دھرتے ہیں تجھ پر، سب جھگڑنے کو۔

بَلۡ هُمۡ قَوۡمٌ خَصِمُونَ   

بلکہ یہ لوگ ہیں جھگڑا لو۔

.58

إِنۡ هُوَ إِلَّا عَبۡدٌ أَنۡعَمۡنَا عَلَيۡهِ

  وہ کیا ہے؟ ایک بندہ ہے، کہ ہم نے اس پر فضل کیا

وَجَعَلۡنَـٰهُ مَثَلاً۬ لِّبَنِىٓ إِسۡرَٲٓءِيلَ   

اور کھڑا کیا(قدرت کا نمونہ بنایا) بنی اسرائیل کے واسطے۔

.59

وَلَوۡ نَشَآءُ لَجَعَلۡنَا مِنكُم مَّلَـٰٓٮِٕكَةً۬ فِى ٱلۡأَرۡضِ يَخۡلُفُونَ   

  اور اگر ہم چاہیں نکالیں تم میں سے فرشتے، رہیں زمین میں تمہاری جگہ۔

.60

وَإِنَّهُ ۥ لَعِلۡمٌ۬ لِّلسَّاعَةِ فَلَا تَمۡتَرُنَّ بِہَا وَٱتَّبِعُونِ‌ۚ

  اور وہ نشان ہے اس گھڑی (قیامت) کا، سو اس میں دھوکا نہ کرو، اور میرا کہا مانو۔

هَـٰذَا صِرَٲطٌ۬ مُّسۡتَقِيمٌ۬ 

یہ ایک سیدھی راہ ہے۔

.61

وَلَا يَصُدَّنَّكُمُ ٱلشَّيۡطَـٰنُ‌ۖإِنَّهُ ۥ لَكُمۡ عَدُوٌّ۬ مُّبِينٌ۬ 

  اور (کہیں) نہ روکے تم کو شیطان۔ وہ تمہارا دشمن ہے صریح (کھلا) ۔

.62

وَلَمَّا جَآءَ عِيسَىٰ بِٱلۡبَيِّنَـٰتِ قَالَ

  اور جب آیا عیسیٰ نشانیاں لے کر، بولا،

قَدۡ جِئۡتُكُم بِٱلۡحِكۡمَةِ وَلِأُبَيِّنَ لَكُم بَعۡضَ ٱلَّذِى تَخۡتَلِفُونَ فِيهِ‌ۖ

میں لایا ہوں تمہارے پاس پکی (دانائی کی) باتیں اور بتانے کو بعضی چیز جس میں تم جھگڑتے تھے،

فَٱتَّقُواْ ٱللَّهَ وَأَطِيعُونِ   

سو ڈرو اﷲ سے، اور میرا کہا مانو۔

.63

إِنَّ ٱللَّهَ هُوَ رَبِّى وَرَبُّكُمۡ فَٱعۡبُدُوهُ‌ۚ

  بیشک اﷲ جو ہے وہی ہے رب میرا اور رب تمہارا۔ اس کی بندگی کرو،

هَـٰذَا صِرَٲطٌ۬ مُّسۡتَقِيمٌ۬ 

یہ ایک سیدھی راہ ہے۔

.64

فَٱخۡتَلَفَ ٱلۡأَحۡزَابُ مِنۢ بَيۡنِہِمۡ‌ۖ

  پھر پھٹ گئے فرقے ان کے بیچ سے۔

فَوَيۡلٌ۬ لِّلَّذِينَ ظَلَمُواْ مِنۡ عَذَابِ يَوۡمٍ أَلِيمٍ 

سو خرابی ہے گنہگاروں کو، آفت سے دکھ والے دن کی۔

.65

هَلۡ يَنظُرُونَ إِلَّا ٱلسَّاعَةَ أَن تَأۡتِيَهُم بَغۡتَةً۬ وَهُمۡ لَا يَشۡعُرُونَ 

  اب یہی راہ دیکھتے ہیں اس گھڑی کی، کہ آ کھڑی ہو ان پر اچانک اور ان کو خبر نہ ہو۔

.66

ٱلۡأَخِلَّآءُ يَوۡمَٮِٕذِۭ بَعۡضُهُمۡ لِبَعۡضٍ عَدُوٌّ إِلَّا ٱلۡمُتَّقِينَ

  جتنے دوست ہیں اس دن دشمن ہوں گے، مگر جو ہیں ڈر والے (متقی) ۔

.67

يَـٰعِبَادِ لَا خَوۡفٌ عَلَيۡكُمُ ٱلۡيَوۡمَ وَلَآ أَنتُمۡ تَحۡزَنُونَ 

  (ان سے کہا جائے گا)

اے بندو میرے! نہ ڈر ہے تم پر آج کے دن اور نہ تم غم کھاؤ۔

.68

ٱلَّذِينَ ءَامَنُواْ بِـَٔايَـٰتِنَا وَڪَانُواْ مُسۡلِمِينَ 

  (یہ وہ ہیں) جو یقین لائے ہماری باتوں پر اور رہے حکم بردار،

.69

ٱدۡخُلُواْ ٱلۡجَنَّةَ أَنتُمۡ وَأَزۡوَٲجُكُمۡ تُحۡبَرُونَ 

  چلے جاؤ بہشت میں تم اور تمہاری عورتیں، کہ تمہاری عزت (تمہیں خوش) کریں۔

.70

يُطَافُ عَلَيۡہِم بِصِحَافٍ۬ مِّن ذَهَبٍ۬ وَأَكۡوَابٍ۬‌ۖ

  لئے پھرتے ہیں ان پاس رکابیاں سونے کی اور آبخورے(کوزے) ،

وَفِيهَا مَا تَشۡتَهِيهِ ٱلۡأَنفُسُ وَتَلَذُّ ٱلۡأَعۡيُنُ‌ۖ

اور وہاں ہے جو دل چاہے، اور جس سے آنکھیں آرام پائیں۔

وَأَنتُمۡ فِيهَا خَـٰلِدُونَ   

اور تم کو ان میں ہمیشہ رہنا۔

.71

وَتِلۡكَ ٱلۡجَنَّةُ ٱلَّتِىٓ أُورِثۡتُمُوهَا بِمَا كُنتُمۡ تَعۡمَلُونَ 

  اور یہ وہی بہشت ہے جو میراث پائی تم نے بدلے ان کاموں کے جو کرتے تھے۔

.72

لَكُمۡ فِيہَا فَـٰكِهَةٌ۬ كَثِيرَةٌ۬ مِّنۡهَا تَأۡكُلُونَ 

  تم کو ان میں میوے ہیں بہت ان میں سے کھاتے ہو۔

.73

إِنَّ ٱلۡمُجۡرِمِينَ فِى عَذَابِ جَهَنَّمَ خَـٰلِدُونَ 

  البتہ جو گنہگار ہیں، دوزخ کی مار(عذاب) میں ہیں ہمیشہ رہتے۔

.74

لَا يُفَتَّرُ عَنۡهُمۡ وَهُمۡ فِيهِ مُبۡلِسُونَ 

  نہ ہلکی ہوئی ہے ان پر اور وہ اسی میں پڑے ہیں نا امید۔

.75

وَمَا ظَلَمۡنَـٰهُمۡ وَلَـٰكِن كَانُواْ هُمُ ٱلظَّـٰلِمِينَ 

 اور ہم نے ان پر ظلم نہیں کیا لیکن تھے وہی بے انصاف۔

.76

وَنَادَوۡاْ يَـٰمَـٰلِكُ لِيَقۡضِ عَلَيۡنَا رَبُّكَ‌ۖ

  اور پکاریں گے(داروغہ جہنم کو) اے مالک! کہیں ہم کو فیصل کر (کام تمام کر) چکے تیرا رب۔

قَالَ إِنَّكُم مَّـٰكِثُونَ 

وہ کہے گا، تم کو رہنا ہے۔

.77

لَقَدۡ جِئۡنَـٰكُم بِٱلۡحَقِّ وَلَـٰكِنَّ أَكۡثَرَكُمۡ لِلۡحَقِّ كَـٰرِهُونَ 

  ہم لائے ہیں تمہارے پاس سچا دین، پر تم بہت لوگ سچی بات سے برا مانتے ہو۔

.78

أَمۡ أَبۡرَمُوٓاْ أَمۡرً۬ا فَإِنَّا مُبۡرِمُونَ 

   کیا انہوں نے ٹھہرائی ہے ایک بات تو ہم بھی کچھ ٹھہرا دیں گے۔

.79

أَمۡ يَحۡسَبُونَ أَنَّا لَا نَسۡمَعُ سِرَّهُمۡ وَنَجۡوَٮٰهُم‌ۚ

   کیا خیال رکھتے ہیں کہ ہم نہیں جانتے ان کا بھید اور مشورہ؟

بَلَىٰ وَرُسُلُنَا لَدَيۡہِمۡ يَكۡتُبُونَ 

کیوں نہیں (کیوں نہیں) اور ہمارے بھیجے ان کے پاس ہیں لکھتے۔

.80

قُلۡ إِن كَانَ لِلرَّحۡمَـٰنِ وَلَدٌ۬ فَأَنَا۟ أَوَّلُ ٱلۡعَـٰبِدِينَ 

  تو کہہ، اگر ہو رحمٰن کی اولاد! تو میں سب سے پہلے پوجوں۔

.81

سُبۡحَـٰنَ رَبِّ ٱلسَّمَـٰوَٲتِ وَٱلۡأَرۡضِ رَبِّ ٱلۡعَرۡشِ عَمَّا يَصِفُونَ 

  پاک ذات ہے وہ رب آسمانوں کا اور زمین کا صاحب تخت کا، ان باتوں سے جو بناتے ہیں۔

.82

فَذَرۡهُمۡ يَخُوضُواْ وَيَلۡعَبُواْ حَتَّىٰ يُلَـٰقُواْ يَوۡمَهُمُ ٱلَّذِى يُوعَدُونَ 

اب چھوڑ دے ان کو بک بک کریں، اور کھیلیں، جب تک ملیں اپنے اس دن سے، جس کا انکووعدہ ہے۔

.83

وَهُوَ ٱلَّذِى فِى ٱلسَّمَآءِ إِلَـٰهٌ۬ وَفِى ٱلۡأَرۡضِ إِلَـٰهٌ۬‌ۚ

  اور وہی ہے جس کی بندگی ہے آسمان میں اور اس کی بندگی ہے زمین میں۔

وَهُوَ ٱلۡحَكِيمُ ٱلۡعَلِيمُ 

اور وہی ہے حکمت والا سب جانتا۔

.84

وَتَبَارَكَ ٱلَّذِى لَهُ ۥ مُلۡكُ ٱلسَّمَـٰوَٲتِ وَٱلۡأَرۡضِ وَمَا بَيۡنَهُمَا

  اور بڑی برکت ہے اسکی، جس کا راج ہے آسمانوں میں اور زمین میں، اور جو انکے بیچ ہے۔

وَعِندَهُ ۥ عِلۡمُ ٱلسَّاعَةِ وَإِلَيۡهِ تُرۡجَعُونَ 

اور اسی پاس ہے خبر قیامت کی۔ اور اسی تک پھر (لوٹ کر) جاؤ گے۔

.85

وَلَا يَمۡلِكُ ٱلَّذِينَ يَدۡعُونَ مِن دُونِهِ ٱلشَّفَـٰعَةَ

  اور اختیار نہیں رکھتے جن کو یہ پکارتے ہیں، سفارش کا،

إِلَّا مَن شَہِدَ بِٱلۡحَقِّ وَهُمۡ يَعۡلَمُونَ   

مگر جس نے گواہی دی سچی، اور ان کو خبر تھی (وہ سفارش کر سکتے ہیں)۔

.86

وَلَٮِٕن سَأَلۡتَهُم مَّنۡ خَلَقَهُمۡ لَيَقُولُنَّ ٱللَّهُ‌ۖ

  اور اگر تو ان سے پوچھے، کہ ان کو کس نے بنایا؟ تو کہیں گے اﷲ نے،

فَأَنَّىٰ يُؤۡفَكُونَ   

پھر کہاں سے الٹ جاتے (بہکے پھرتے) ہیں۔

.87

وَقِيلِهِۦ يَـٰرَبِّ إِنَّ هَـٰٓؤُلَآءِ قَوۡمٌ۬ لَّا يُؤۡمِنُونَ 

  قسم ہے رسول کے اس کہنے کی کہ اے رب! یہ لوگ ہیں کہ یقین نہیں لاتے۔

.88

فَٱصۡفَحۡ عَنۡہُمۡ وَقُلۡ سَلَـٰمٌ۬‌ۚ

  سو تو مڑ آ ان کی طرف سے، اور کہہ، سلام ہے

فَسَوۡفَ يَعۡلَمُونَ 

اب آخر کو (انجام) معلوم کر لیں گے۔

*********

.89

Copy Rights:

Zahid Javed Rana, Abid Javed Rana, Lahore, Pakistan

Visits wef 2016

AmazingCounters.com