القرآن الحکیم (اردو ترجمہ)

حضرت شاہ عبدالقادر

سورۃ الواقعہ

Previous           Index           Next

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

 

إِذَا وَقَعَتِ ٱلۡوَاقِعَةُ 

 جب ہو پڑے(پیش آئے) ہو پڑنے والی (پیش آنے والا واقعہ) ،

.1

لَيۡسَ لِوَقۡعَتِہَا كَاذِبَةٌ 

نہیں اس کے ہو پڑنے میں جھوٹ،

.2

خَافِضَةٌ۬ رَّافِعَةٌ 

 اُتارتی ہے چڑھاتی (تہہ و بالا کرنے والا) ،

.3

إِذَا رُجَّتِ ٱلۡأَرۡضُ رَجًّ۬ا 

جب لرزے زمین کپکپا کر،

.4

وَبُسَّتِ ٱلۡجِبَالُ بَسًّ۬ا 

 اور ٹکڑے ہوں پہاڑ ٹوٹ کر،

.5

فَكَانَتۡ هَبَآءً۬ مُّنۢبَثًّ۬ا 

پھر ہو جائیں گرد اڑتی (مانند غبار)،

.6

وَكُنتُمۡ أَزۡوَٲجً۬ا ثَلَـٰثَةً۬ 

اور تم ہو جاؤ (گروہ)تین قسم۔

.7

فَأَصۡحَـٰبُ ٱلۡمَيۡمَنَةِ مَآ أَصۡحَـٰبُ ٱلۡمَيۡمَنَةِ 

پھر داہنے والے،کیسے (خوش نصیب)داہنے والے؟

.8

وَأَصۡحَـٰبُ ٱلۡمَشۡـَٔمَةِ مَآ أَصۡحَـٰبُ ٱلۡمَشۡـَٔمَةِ 

اور بائیں والےکیسے (بد نصیب)بائیں والے؟

.9

وَٱلسَّـٰبِقُونَ ٱلسَّـٰبِقُونَ 

اور اگاڑی (سبقت لے جانے)والے سو اگاڑی (سبقت لے جانے)والے،

.10

أُوْلَـٰٓٮِٕكَ ٱلۡمُقَرَّبُونَ 

وہ لوگ ہیں پاس والے (مُقرب)،

.11

فِى جَنَّـٰتِ ٱلنَّعِيمِ 

(رہیں گے)باغوں میں نعمت کے،

.12

ثُلَّةٌ۬ مِّنَ ٱلۡأَوَّلِينَ 

انبوہ (بہت)ہے پہلوں میں،

.13

وَقَلِيلٌ۬ مِّنَ ٱلۡأَخِرِينَ 

اور تھوڑے ہیں پچھلوں میں،

.14

عَلَىٰ سُرُرٍ۬ مَّوۡضُونَةٍ۬ 

 بیٹھے ہیں پلنگوں پر، سونے سے بُنے،

.15

مُّتَّكِـِٔينَ عَلَيۡہَا مُتَقَـٰبِلِينَ 

 تکیے دیئے اُن پر، (بیٹھے)ایک دوسرے کے سامنے،

.16

يَطُوفُ عَلَيۡہِمۡ وِلۡدَٲنٌ۬ مُّخَلَّدُونَ 

لئے پھرتے ہیں ان پاس لڑکے سدا رہنے والے۔

.17

بِأَكۡوَابٍ۬ وَأَبَارِيقَ وَكَأۡسٍ۬ مِّن مَّعِينٍ۬ 

آبخورے (ساغر)اور تتَّیَّان(صراحی)۔ اور پیالہ (جام)نتھری شراب کا،

.18

لَّا يُصَدَّعُونَ عَنۡہَا وَلَا يُنزِفُونَ 

سر نہ دُکھے جس سے، اور نہ بکنا (عقل بدکے) لگے،

.19

وَفَـٰكِهَةٍ۬ مِّمَّا يَتَخَيَّرُونَ 

اور میوہ جونسا چُن (جسے پسند کریں) لیں،

.20

وَلَحۡمِ طَيۡرٍ۬ مِّمَّا يَشۡتَہُونَ 

 اور گوشت اڑتے جانوروں کا، جس قِسم کو جی چاہے۔

.21

وَحُورٌ عِينٌ۬ 

اور گوریاں (حوریں) بڑی آنکھوں والیاں۔

.22

كَأَمۡثَـٰلِ ٱللُّؤۡلُوِٕ ٱلۡمَكۡنُونِ 

  کئی برابر (ایسی جیسے) لپٹے موتی کے۔

.23

جَزَآءَۢ بِمَا كَانُواْ يَعۡمَلُونَ

بدلہ اس کا جو (اعمال) کرتے تھے۔

.24

لَا يَسۡمَعُونَ فِيہَا لَغۡوً۬ا وَلَا تَأۡثِيمًا 

 نہیں سنتے وہاں بکنا (بے ہودہ بات) اور نہ جھوٹ لگانا،

.25

إِلَّا قِيلاً۬ سَلَـٰمً۬ا سَلَـٰمً۬ا 

 مگر ایک بولنا سلام سلام۔

.26

وَأَصۡحَـٰبُ ٱلۡيَمِينِ مَآ أَصۡحَـٰبُ ٱلۡيَمِينِ 

اور داہنے والے،کیسے (خوش نصیب) داہنے والے؟

.27

فِى سِدۡرٍ۬ مَّخۡضُودٍ۬ 

رہتے (رہیں گے) بیری کے درختوں کانٹے جھاڑے ہوؤں (بے خار) میں،

.28

وَطَلۡحٍ۬ مَّنضُودٍ۬ 

 اور کیلے تہہ بر تہہ،

.29

وَظِلٍّ۬ مَّمۡدُودٍ۬ 

 اور چھاؤں لمبی (دور تک پھیلی ہوئی)،

.30

وَمَآءٍ۬ مَّسۡكُوبٍ۬ 

اور پانی بہایا (رواں، جاری)،

.31

وَفَـٰكِهَةٍ۬ كَثِيرَةٍ۬ 

 اور میوہ بہت،

.32

لَّا مَقۡطُوعَةٍ۬ وَلَا مَمۡنُوعَةٍ۬ 

نہ ٹوٹا (ختم ہوا)اور نہ روکا (بلا روک ٹوک)،

.33

وَفُرُشٍ۬ مَّرۡفُوعَةٍ 

پھر بچھونے (نشست گاہیں) اُونچے۔

.34

إِنَّآ أَنشَأۡنَـٰهُنَّ إِنشَآءً۬ 

ہم نے وہ عورتیں اُٹھائیں (پیدا کیں) ایک اُٹھان پر(نئے سرے سے)،

.35

فَجَعَلۡنَـٰهُنَّ أَبۡكَارًا 

پھر کیا (بنایا)ان کو کنواریاں،

.36

عُرُبًا أَتۡرَابً۬ا 

پیار دلاتیاں(عاشق زار) ایک عمر کی (ہم سن)،

.37

لِّأَصۡحَـٰبِ ٱلۡيَمِينِ 

(یہ ہو گا) واسطے داہنے والوں کے۔

.38

ثُلَّةٌ۬ مِّنَ ٱلۡأَوَّلِينَ 

 انبوہ ہے (بہت ہوں گے) پہلوں میں

.39

وَثُلَّةٌ۬ مِّنَ ٱلۡأَخِرِينَ 

اور انبوہ ہے (بہت ہوں گے)پچھلوں میں،

.40

وَأَصۡحَـٰبُ ٱلشِّمَالِ مَآ أَصۡحَـٰبُ ٱلشِّمَالِ 

 اور بائیں والے۔ کیسے (بد نصیب) بائیں والے؟

.41

فِى سَمُومٍ۬ وَحَمِيمٍ۬ 

آنچ (لُو) کی بھاپ (لپٹ) میں، جلتے (کھولتے) پانی میں،

.42

وَظِلٍّ۬ مِّن يَحۡمُومٍ۬ 

اور چھاؤں میں دھوئیں کی،

.43

لَّا بَارِدٍ۬ وَلَا كَرِيمٍ 

(جو) نہ ٹھنڈی اور نہ عزت کی(آرام دہ)۔

.44

إِنَّہُمۡ كَانُواْ قَبۡلَ ذَٲلِكَ مُتۡرَفِينَ 

وہ لوگ تھے اس سے پہلے آسودہ (خوشحال)،

.45

وَكَانُواْ يُصِرُّونَ عَلَى ٱلۡحِنثِ ٱلۡعَظِيمِ 

 اور ضد (اصرار) کرتے اس بڑے گناہ پر،

.46

وَكَانُواْ يَقُولُونَ أَٮِٕذَا مِتۡنَا وَكُنَّا تُرَابً۬ا وَعِظَـٰمًا أَءِنَّا لَمَبۡعُوثُونَ 

اور تھے کہتے کیا جب ہم مر گئے اور ہو گئے مٹی اور ہڈیاں، کیا ہم کو پھر اُٹھانا ہے؟

.47

أَوَءَابَآؤُنَا ٱلۡأَوَّلُونَ 

  کیا ہمارے باپ دادوں کو بھی (جو) اگلے (پہلے گزر چکے)؟

.48

قُلۡ إِنَّ ٱلۡأَوَّلِينَ وَٱلۡأَخِرِينَ 

تو کہہ، (بلاشبہ) اگلے اور پچھلے (بھی)،

.49

لَمَجۡمُوعُونَ إِلَىٰ مِيقَـٰتِ يَوۡمٍ۬ مَّعۡلُومٍ۬ 

 سب اکھٹے ہونے ہیں ایک دن مقرر کے وقت پر

.50

ثُمَّ إِنَّكُمۡ أَيُّہَا ٱلضَّآلُّونَ ٱلۡمُكَذِّبُونَ 

پھر تم جو چاہو، اے بہکو (گمراہ) جھٹلانے والو!

.51

لَأَكِلُونَ مِن شَجَرٍ۬ مِّن زَقُّومٍ۬ 

البتہ کھاؤ گے ایک درخت سیہنڈ (زقُّوم) کے سے،

.52

فَمَالِـُٔونَ مِنۡہَا ٱلۡبُطُونَ 

پھر بھرو گے اس سے پیٹ،

.53

فَشَـٰرِبُونَ عَلَيۡهِ مِنَ ٱلۡحَمِيمِ 

پھر پیؤ گے اس پر ایک جلتا (کھولتا) پانی،

.54

فَشَـٰرِبُونَ شُرۡبَ ٱلۡهِيمِ 

پھر پیؤ گے جیسے پیئیں اونٹ تونسے(پیاسے)۔

.55

هَـٰذَا نُزُلُهُمۡ يَوۡمَ ٱلدِّينِ 

 یہ مہمانی ہے ان کی انصاف کے دن (روز جزا)۔

.56

نَحۡنُ خَلَقۡنَـٰكُمۡ فَلَوۡلَا تُصَدِّقُونَ 

ہم (ہی) نے تم کو بنایا (پیدا کیا)، پھر کیوں نہیں سچ مانتے۔

.57

أَفَرَءَيۡتُم مَّا تُمۡنُونَ 

بھلا دیکھو جو پانی ٹپکاتے (نطفہ ڈالتے) ہو،

.58

ءَأَنتُمۡ تَخۡلُقُونَهُ ۥۤ أَمۡ نَحۡنُ ٱلۡخَـٰلِقُونَ 

اب تم اس (بچہ) کو بناتے (پیدا کرتے) ہو یا ہم بنانے (پیدا کرنے والے) والے؟

.59

نَحۡنُ قَدَّرۡنَا بَيۡنَكُمُ ٱلۡمَوۡتَ وَمَا نَحۡنُ بِمَسۡبُوقِينَ 

ہم نے ٹھہرا دیا تم میں مرنا، اور ہم ہار(عاجز) نہیں رہے ،

.60

عَلَىٰٓ أَن نُّبَدِّلَ أَمۡثَـٰلَكُمۡ وَنُنشِئَكُمۡ فِى مَا لَا تَعۡلَمُونَ 

اس سے کہ بدل لائیں تمہاری طرح کے اور اُٹھا کھڑا (پیدا) کریں تم کو، جہاں (ایسی شکل و صورت) تم نہیں جانتے۔

.61

وَلَقَدۡ عَلِمۡتُمُ ٱلنَّشۡأَةَ ٱلۡأُولَىٰ فَلَوۡلَا تَذَكَّرُونَ 

اور جان چکے ہو پہلا اُٹھان (پیدائش)، پھر کیوں نہیں یاد (سبق حاصل) کرتے؟

.62

أَفَرَءَيۡتُم مَّا تَحۡرُثُونَ 

بھلا دیکھو تو! جو بوتے ہو؟

.63

ءَأَنتُمۡ تَزۡرَعُونَهُ ۥۤ أَمۡ نَحۡنُ ٱلزَّٲرِعُونَ 

   کیا تم اس کو کرتے (اگاتے)ہو کھیتی یا ہم ہیں کھیتی کرنے والے۔

.64

لَوۡ نَشَآءُ لَجَعَلۡنَـٰهُ حُطَـٰمً۬ا فَظَلۡتُمۡ تَفَكَّهُونَ 

 اگر ہم چاہیں کہ کر ڈالیں اس کو روندن (بھس)، پھر تم سارے دن رہو باتیں بناتے،

.65

إِنَّا لَمُغۡرَمُونَ 

 ہم قرضدار رہ گئے(چٹی پڑ گئی)،

.66

بَلۡ نَحۡنُ مَحۡرُومُونَ 

بلکہ ہم بدنصیب ہوئیے،

.67

أَفَرَءَيۡتُمُ ٱلۡمَآءَ ٱلَّذِى تَشۡرَبُونَ 

بھلا دیکھو تو! پانی جو تم پیتے ہو،

.68

ءَأَنتُمۡ أَنزَلۡتُمُوهُ مِنَ ٱلۡمُزۡنِ أَمۡ نَحۡنُ ٱلۡمُنزِلُونَ 

کیا تم نے اُتارا اُسکو بادل سے یا ہم ہیں اُتارنے والے؟

.69

لَوۡ نَشَآءُ جَعَلۡنَـٰهُ أُجَاجً۬ا فَلَوۡلَا تَشۡكُرُونَ 

اگر ہم چاہیں اس کو کر دیں کھارا، پھر کیوں نہیں حق مانتے؟

.70

أَفَرَءَيۡتُمُ ٱلنَّارَ ٱلَّتِى تُورُونَ 

بھلا دیکھو تو! آگ جو سُلگاتے ہو؟

.71

ءَأَنتُمۡ أَنشَأۡتُمۡ شَجَرَتَہَآ أَمۡ نَحۡنُ ٱلۡمُنشِـُٔونَ 

کیا تم نے اُٹھایا (پیدا کیا) اس کا درخت، یا ہم ہیں اُٹھانے (پیدا کرنے) والے،

.72

نَحۡنُ جَعَلۡنَـٰهَا تَذۡكِرَةً۬ وَمَتَـٰعً۬ا لِّلۡمُقۡوِينَ 

ہم نے وہ بنائے یاد دلانے کو، اور برتنے کو جنگل (حاجت ) والوں کے۔

.73

فَسَبِّحۡ بِٱسۡمِ رَبِّكَ ٱلۡعَظِيمِ

سو بول پاکی (تسبیح کر) اپنے رب کے نام کی، جو سب سے بڑا۔

.74

فَلَآ أُقۡسِمُ بِمَوَٲقِعِ ٱلنُّجُومِ 

سو میں قَسم کھاتا ہوں تارے ڈوبنے کی،

.75

وَإِنَّهُ ۥ لَقَسَمٌ۬ لَّوۡ تَعۡلَمُونَ عَظِيمٌ 

 اور یہ قَسم ہے اگر سمجھو تو بڑی قسم،

.76

إِنَّهُ ۥ لَقُرۡءَانٌ۬ كَرِيمٌ۬ 

بیشک یہ قرآن ہے عزت والا،

.77

فِى كِتَـٰبٍ۬ مَّكۡنُونٍ۬ 

 لِکھا چھُپی (محفوظ) کتاب میں،

.78

لَّا يَمَسُّهُ ۥۤ إِلَّا ٱلۡمُطَهَّرُونَ 

اس کو وہی چھوتے ہیں جو پاک بنے ہیں،

.79

تَنزِيلٌ۬ مِّن رَّبِّ ٱلۡعَـٰلَمِينَ 

اُتارا ہے جہان کے صاحب سے۔

.80

 أَفَبِہَـٰذَا ٱلۡحَدِيثِ أَنتُم مُّدۡهِنُونَ  

 اب کیا اس بات میں تم سستی کرتے ہو؟

.81

وَتَجۡعَلُونَ رِزۡقَكُمۡ أَنَّكُمۡ تُكَذِّبُونَ  

اور اپنا حصہ یہی لیتے ہو کہ تم جھٹلاتے ہو،

.82

فَلَوۡلَآ إِذَا بَلَغَتِ ٱلۡحُلۡقُومَ

پھر کیوں نہ جس وقت جان پہنچے حلق کو،

.83

وَأَنتُمۡ حِينَٮِٕذٍ۬ تَنظُرُونَ  

 اور تم اس وقت دیکھتے ہو،

.84

 وَنَحۡنُ أَقۡرَبُ إِلَيۡهِ مِنكُمۡ وَلَـٰكِن لَّا تُبۡصِرُونَ

اور ہم اس کے پاس ہیں تم سے زیادہ، پر تم نہیں دیکھتے۔

.85

فَلَوۡلَآ إِن كُنتُمۡ غَيۡرَ مَدِينِينَ 

پھر کیوں اگر تم نہیں کسی کے حکم میں،

.86

تَرۡجِعُونَہَآ إِن كُنتُمۡ صَـٰدِقِينَ 

 کیوں نہیں پھیر لیتے اس کو اگر ہو تم سچے۔

.87

فَأَمَّآ إِن كَانَ مِنَ ٱلۡمُقَرَّبِينَ 

سو جو اگر وہ ہوا پاس والوں (مقربین) میں،

.88

فَرَوۡحٌ۬ وَرَيۡحَانٌ۬ وَجَنَّتُ نَعِيمٍ۬ 

تو راحت ہے اور روزی ہے اور باغ نعمت کا۔

.89

وَأَمَّآ إِن كَانَ مِنۡ أَصۡحَـٰبِ ٱلۡيَمِينِ 

اور جو اگر وہ ہوا داہنے والوں (اصحاب الیمین) میں

.90

فَسَلَـٰمٌ۬ لَّكَ مِنۡ أَصۡحَـٰبِ ٱلۡيَمِينِ 

 تو سلامتی پہنچے تجھ کو داہنے والوں سے۔

.91

وَأَمَّآ إِن كَانَ مِنَ ٱلۡمُكَذِّبِينَ ٱلضَّآلِّينَ 

اور جو اگر وہ ہوا جھٹلانے والوں بہکوں (گمراہوں) میں،

.92

فَنُزُلٌ۬ مِّنۡ حَمِيمٍ۬ 

تو مہمانی ہے جلتا (کھولتا) پانی،

.93

وَتَصۡلِيَةُ جَحِيمٍ 

اور پیٹھانا (پہنچانا) آگ میں۔

.94

إِنَّ هَـٰذَا لَهُوَ حَقُّ ٱلۡيَقِينِ 

بیشک یہ باتیں یہی ہے لائق یقین کے۔

.95

فَسَبِّحۡ بِٱسۡمِ رَبِّكَ ٱلۡعَظِيمِ 

سو بول پاکی (تسبیح کر) اپنے رب کے نام سے، جو سب سے بڑا۔

*********

.96

Copy Rights:

Zahid Javed Rana, Abid Javed Rana, Lahore, Pakistan

Visits wef 2016

AmazingCounters.com