Ads:

Rosegal Plus Size 

Invite Friends Get $15

Zaful site coupon

Clearance Sale

تفسیر ابن کثیر  (حواشی: مولانا صلاح الدين يوسف)

سورۃ الاخلاص

Previous           Index           Next

اردو اور عربی فونٹ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئے یہاں کلک کریں

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

قُلْ هُوَ اللَّهُ أَحَدٌ    (1)

آپ کہہ دیجئے کہ وہ اللہ تعالیٰ ایک (ہی) ہے

اللَّهُ الصَّمَدُ    (2)

اللہ تعالیٰ بےنیاز ہے

‏ یعنی سب اس کے محتاج ہیں، وہ کسی کا محتاج نہیں۔

لَمْ يَلِدْ وَلَمْ يُولَدْ    (3)

نہ اس سے کوئی پیدا ہوا اور نہ وہ کسی سے پیدا ہوا

یعنی نہ کوئی چیز اس سے نکلی ہے نہ وہ کسی چیز سے نکلا ہے۔

وَلَمْ يَكُنْ لَهُ كُفُوًا أَحَدٌ  (4)

اور نہ کوئی اس کا ہمسر ہے۔

اس کی ذات میں اس کی صفات میں اور نہ اس کے افعال میں۔لیس کمثلہ شئی

حدیث قدسی میں ہے کہ اللہ تعالیٰ فرماتا ہے:

انسان مجھے گالی دیتا ہے یعنی میرے لیے اولاد ثابت کرتا ہے، حالانکہ میں ایک ہوں بےنیاز ہوں، میں نے کسی کو جنا ہے نہ کسی سے پیدا ہوا ہوں اور نہ کوئی میرا ہمسر ہے (صحیح بخاری)

اس سورت میں ان کا بھی رد ہو گیا جو متعدد خداؤں کے قائل ہیں اور جو اللہ کے لیے اولاد ثابت کرتے ہیں اور جو اس کو دوسروں کا شریک گردانتے ہیں اور ان کا بھی جو سرے سے وجود باری تعالیٰ ہی کے قائل نہیں۔

*********

Copy Rights:

Zahid Javed Rana, Abid Javed Rana, Lahore, Pakistan

Pages Viewed since 2016