القرآن الحکیم (اردو ترجمہ)

حضرت شاہ عبدالقادر

سورۃ یٰس

Previous           Index           Next

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

 

يسٓ   

 یا سین

.1

وَٱلۡقُرۡءَانِ ٱلۡحَكِيمِ   

 قسم ہے اس پکے قرآن (حکیم) کی۔

.2

إِنَّكَ لَمِنَ ٱلۡمُرۡسَلِينَ   

 تو تحقیق (یقیناً) ہے بھیجے ہوؤں (رسولوں) میں سے۔

.3

عَلَىٰ صِرَٲطٍ۬ مُّسۡتَقِيمٍ۬   

 اُوپر سیدھی راہ کے۔

.4

تَنزِيلَ ٱلۡعَزِيزِ ٱلرَّحِيمِ   

 (یہ قرآن) اُتارا زبردست رحم والے کا۔

.5

لِتُنذِرَ قَوۡمً۬ا مَّآ أُنذِرَ ءَابَآؤُهُمۡ

 کہ تو ڈرائے (متنبہ کرے) ایک لوگوں کو، کہ ڈر نہیں سُنا اُن کے باپ دادوں نے،

فَهُمۡ غَـٰفِلُونَ   

 سو وہ خبر نہیں رکھتے۔

.6

لَقَدۡ حَقَّ ٱلۡقَوۡلُ عَلَىٰٓ أَكۡثَرِهِمۡ فَهُمۡ لَا يُؤۡمِنُونَ   

 ثابت (پوری) ہو چکی ہے بات ان بہتوں پر، سو وہ نہ مانیں (ایمان نہ لائیں) گے۔

.7

إِنَّا جَعَلۡنَا فِىٓ أَعۡنَـٰقِهِمۡ أَغۡلَـٰلاً۬ فَهِىَ إِلَى ٱلۡأَذۡقَانِ فَهُم مُّقۡمَحُونَ   

ہم نے ڈالے ہیں انکی گردنوں میں طوق،سو وہ ہیں(جکڑے) ٹھوڑیوں تک، پھر انکے سر اُلل (اکڑ) رہے ہیں۔

.8

وَجَعَلۡنَا مِنۢ بَيۡنِ أَيۡدِيہِمۡ سَدًّ۬ا وَمِنۡ خَلۡفِهِمۡ سَدًّ۬ا

اور بنائی (کھڑی کر دی) ہم نے ان کے آگے دیوار، اور ان کے پیچھے دیوار،

فَأَغۡشَيۡنَـٰهُمۡ فَهُمۡ لَا يُبۡصِرُونَ   

پھر اوپر سے ڈھانک دیا سو ان کو نہیں سوجھتا۔

.9

وَسَوَآءٌ عَلَيۡہِمۡ ءَأَنذَرۡتَهُمۡ أَمۡ لَمۡ تُنذِرۡهُمۡ لَا يُؤۡمِنُونَ   

 اور برابر ہے تُو نے ان کو ڈرایا یا نہ ڈرایا یقین نہیں کرتے۔

.10

إِنَّمَا تُنذِرُ مَنِ ٱتَّبَعَ ٱلذِّڪۡرَ وَخَشِىَ ٱلرَّحۡمَـٰنَ بِٱلۡغَيۡبِۖ

 تُو تو ڈر سنائے اُس کو جو چلے سمجھانے پر، اور ڈرے رحمٰن سے بن دیکھے۔

فَبَشِّرۡهُ بِمَغۡفِرَةٍ۬ وَأَجۡرٍ۬ ڪَرِيمٍ   

سو اس کو دے خوشخبری معافی کی، اور عزت کے نیگ (اجر کریم) کی۔

.11

إِنَّا نَحۡنُ نُحۡىِ ٱلۡمَوۡتَىٰ وَنَڪۡتُبُ مَا قَدَّمُواْ وَءَاثَـٰرَهُمۡۚ

ہم ہیں جو جلاتے (زندہ کرتے) ہیں مُردے، اور لکھتے ہیں جو آگے بھیج چکے، اور ان کے پیچھے نشان رہے۔

وَكُلَّ شَىۡءٍ أَحۡصَيۡنَـٰهُ فِىٓ إِمَامٍ۬ مُّبِينٍ۬   

اور ہر چیز گِن لی ہے ہم نے ایک کھلی اصل (کتاب) میں۔

.12

وَٱضۡرِبۡ لَهُم مَّثَلاً أَصۡحَـٰبَ ٱلۡقَرۡيَةِ إِذۡ جَآءَهَا ٱلۡمُرۡسَلُونَ   

 اور بیان کرو ان کے واسطے ایک کہاوت لوگ اس گاؤں کے، جب آئے اس میں بھیجے ہوئے (پیغمبر) ۔

.13

إِذۡ أَرۡسَلۡنَآ إِلَيۡہِمُ ٱثۡنَيۡنِ فَكَذَّبُوهُمَا فَعَزَّزۡنَا بِثَالِثٍ۬

جب بھیجے ہم نے ان کی طرف دو (پیغمبر) ، تو ان کو جھٹلایا ،پھر ہم نے زور دیا (تقویت دی) تیسرے سے،

فَقَالُوٓاْ إِنَّآ إِلَيۡكُم مُّرۡسَلُونَ   

 تب کہا، ہم تمہاری طرف آئے ہیں بھیجے۔

.14

قَالُواْ مَآ أَنتُمۡ إِلَّا بَشَرٌ۬ مِّثۡلُنَاوَمَآ أَنزَلَ ٱلرَّحۡمَـٰنُ مِن شَىۡءٍ

وہ بولے تم تو یہی انسان ہو جیسے ہم، اور رحمٰن نے کچھ نہیں اُتارا،

إِنۡ أَنتُمۡ إِلَّا تَكۡذِبُونَ 

تم سارا جھوٹ کہتے ہو۔

.15

قَالُواْ رَبُّنَا يَعۡلَمُ إِنَّآ إِلَيۡكُمۡ لَمُرۡسَلُونَ   

 (انہوں نے) کہا، ہمارا رب جانتا ہے ہم بیشک تمہاری طرف بھیجے (رسول بن کر) آئے ہیں۔

.16

وَمَا عَلَيۡنَآ إِلَّا ٱلۡبَلَـٰغُ ٱلۡمُبِينُ   

 اور ہمارا ذمہ یہی ہے پہنچا دینا کھول کر (صاف صاف) ۔

.17

قَالُوٓاْ إِنَّا تَطَيَّرۡنَا بِكُمۡۖ

بولے ہم نے نا مبارک دیکھا تم کو۔

لَٮِٕن لَّمۡ تَنتَهُواْ لَنَرۡجُمَنَّكُمۡ وَلَيَمَسَّنَّكُم مِّنَّا عَذَابٌ أَلِيمٌ۬   

اگر تم نہ چھوڑو (باز آؤ) گے تو ہم تم کو سنگسار کریں گے اور تم کو لگے گی ہمارے ہاتھ سے دُکھ کی مار ۔

.18

قَالُواْ طَـٰٓٮِٕرُكُم مَّعَكُمۡۚ

 کہنے لگے تمہاری نا مبارکی (نحوست) تمہارے ساتھ ہے۔

أَٮِٕن ذُڪِّرۡتُمۚ

کیا اس سے کہ تم کو سمجھایا؟

بَلۡ أَنتُمۡ قَوۡمٌ۬ مُّسۡرِفُونَ   

کوئی نہیں! پر تم لوگ ہو کہ حد پر نہیں رہتے۔

.19

وَجَآءَ مِنۡ أَقۡصَا ٱلۡمَدِينَةِ رَجُلٌ۬ يَسۡعَىٰ

 اور آیا شہر کے پرلے سرے (دور دراز گوشے) سے ایک مرد دوڑتا۔

قَالَ يَـٰقَوۡمِ ٱتَّبِعُواْ ٱلۡمُرۡسَلِينَ   

بولا، اے قوم! چلو راہ پر (پیروی اختیار کرو) اُن بھیجے ہوؤں کے(رسولوں کی) ۔

.20

ٱتَّبِعُواْ مَن لَّا يَسۡـَٔلُكُمۡ أَجۡرً۬ا وَهُم مُّهۡتَدُونَ   

چلو راہ پر ایسوں کی جو تم سے نیگ (اجر) نہیں مانگتے، اور راہ سہجھے (ٹھیک راستے پر) ہیں۔

.21

وَمَا لِىَ لَآ أَعۡبُدُ ٱلَّذِى فَطَرَنِى وَإِلَيۡهِ تُرۡجَعُونَ   

اور مجھ کو کیا ہے کہ میں بندگی نہ کروں اسکی جس نے مجھ کو بنایا، اور اسی کی طرف پھر (لوٹائے) جاؤ گے۔

.22

ءَأَتَّخِذُ مِن دُونِهِۦۤ ءَالِهَةً

بھلا میں پکڑوں اسکے سوا اوروں کو پوجنا؟

إِن يُرِدۡنِ ٱلرَّحۡمَـٰنُ بِضُرٍّ۬ لَّا تُغۡنِ عَنِّى شَفَـٰعَتُهُمۡ شَيۡـًٔ۬ا وَلَا يُنقِذُونِ   

کہ اگر مجھ پر چاہے رحمٰن تکلیف، کچھ کام نہ آئے مجھ کو انکی سفارش، اور نہ وہ مجھ کو چھڑائیں۔

.23

إِنِّىٓ إِذً۬ا لَّفِى ضَلَـٰلٍ۬ مُّبِينٍ   

 تو تو میں بھٹکا رہوں صریح۔

.24

إِنِّىٓ ءَامَنتُ بِرَبِّكُمۡ فَٱسۡمَعُونِ   

میں یقین لایا تمہارے رب پر، مجھ سے سُن لو۔

.25

قِيلَ ٱدۡخُلِ ٱلۡجَنَّةَۖ

حکم ہوا کہ چلا جا بہشت میں۔

قَالَ يَـٰلَيۡتَ قَوۡمِى يَعۡلَمُونَ   

 بولا کسی طرح میری قوم معلوم کر یں۔

.26

بِمَا غَفَرَ لِى رَبِّى وَجَعَلَنِى مِنَ ٱلۡمُكۡرَمِينَ 

 کہ بخشا مجھ کو میرے رب نے اور کیا مجھ کو عزت والوں میں۔

.27

وَمَآ أَنزَلۡنَا عَلَىٰ قَوۡمِهِۦ مِنۢ بَعۡدِهِۦ مِن جُندٍ۬ مِّنَ ٱلسَّمَآءِ وَمَا كُنَّا مُنزِلِينَ   

 اور اُتاری نہیں ہم نے اسکی قوم پر اس کے پیچھے کوئی فوج آسمان سے، اور ہم اتارا نہیں کرتے۔

.28

إِن كَانَتۡ إِلَّا صَيۡحَةً۬ وَٲحِدَةً۬ فَإِذَا هُمۡ خَـٰمِدُونَ   

یہی تھی ایک چنگھاڑ، پھر تبھی بُجھ رہے (ہلاک ہوئے) ۔

.29

يَـٰحَسۡرَةً عَلَى ٱلۡعِبَادِ‌ۚ

 کیا افسوس ہے بندوں پر!

مَا يَأۡتِيهِم مِّن رَّسُولٍ إِلَّا كَانُواْ بِهِۦ يَسۡتَہۡزِءُونَ   

کوئی رسول نہیں آیا ان پاس، جس سے ٹھٹھا (مذاق) نہیں کرتے۔

.30

أَلَمۡ يَرَوۡاْ كَمۡ أَهۡلَكۡنَا قَبۡلَهُم مِّنَ ٱلۡقُرُونِ

 کیا نہیں دیکھتے کتنی کھپا (ہلاک کر) چکے ہم ان سے پہلے سنگتیں (قومیں) ؟

أَنَّہُمۡ إِلَيۡہِمۡ لَا يَرۡجِعُونَ   

کہ وہ ان پاس پھر (لوٹ کر) نہیں آتے۔

.31

وَإِن كُلٌّ۬ لَّمَّا جَمِيعٌ۬ لَّدَيۡنَا مُحۡضَرُونَ   

 اور ساروں (تمام) میں کوئی نہیں جو اکھٹے نہ آئیں ہمارے پاس پکڑے۔

.32

وَءَايَةٌ۬ لَّهُمُ ٱلۡأَرۡضُ ٱلۡمَيۡتَةُ

 اور ایک نشانی ہے ان کو زمین مردہ۔

أَحۡيَيۡنَـٰهَاوَأَخۡرَجۡنَا مِنۡہَا حَبًّ۬ا فَمِنۡهُ يَأۡڪُلُونَ   

اس کو ہم نے جلایا (زندہ کیا) اور نکالا اس میں سے اناج، سو اس میں سے کھاتے ہیں۔

.33

وَجَعَلۡنَا فِيهَا جَنَّـٰتٍ۬ مِّن نَّخِيلٍ۬ وَأَعۡنَـٰبٍ۬

اور بنائے (پیدا کئے) ہم نے اس میں باغ، کھجور کے اور انگور کے،

وَفَجَّرۡنَا فِيہَا مِنَ ٱلۡعُيُونِ   

اور بنائے اس میں بعضے چشمے۔

.34

لِيَأۡڪُلُواْ مِن ثَمَرِهِۦ وَمَا عَمِلَتۡهُ أَيۡدِيهِمۡ‌ۖ

 کہ کھائیں اسکے میوؤں سے، اور وہ بنایا نہیں ان کے ہاتھوں نے۔

أَفَلَا يَشۡڪُرُونَ   

پھر کیوں شکر نہیں کرتے؟

.35

سُبۡحَـٰنَ ٱلَّذِى خَلَقَ ٱلۡأَزۡوَٲجَ ڪُلَّهَا

پاک ذات ہے جس نے بنائے جوڑے سب چیز کے،

مِمَّا تُنۢبِتُ ٱلۡأَرۡضُ وَمِنۡ أَنفُسِهِمۡ وَمِمَّا لَا يَعۡلَمُونَ  

اس قِسم سے جو اُگتا ہے زمین میں، اور آپ ان میں اور جن چیزوں میں کہ ان کو خبر نہیں۔

.36

وَءَايَةٌ۬ لَّهُمُ ٱلَّيۡلُ

 اور ایک نشانی ہے ان کو رات ،

نَسۡلَخُ مِنۡهُ ٱلنَّہَارَ فَإِذَا هُم مُّظۡلِمُونَ   

ادھیڑ (کھینچ) لیتے ہیں ہم اس سے دن، پھر تبھی رہ جاتے ہیں اندھیرے میں۔

.37

وَٱلشَّمۡسُ تَجۡرِى لِمُسۡتَقَرٍّ۬ لَّهَا‌ۚ

 سُورج چلا جاتا ہے اپنی ٹھہری راہ (ٹھکانے) پر۔

ذَٲلِكَ تَقۡدِيرُ ٱلۡعَزِيزِ ٱلۡعَلِيمِ   

یہ سادھا (نظام) ہے اس زبردست با خبر کا۔

.38

وَٱلۡقَمَرَ قَدَّرۡنَـٰهُ مَنَازِلَ حَتَّىٰ عَادَ كَٱلۡعُرۡجُونِ ٱلۡقَدِيمِ   

 اور چاند کو ہم نے بانٹ (مقرر کر) دی ہیں منزلیں، یہاں تک کہ پھر آرہے جیسے ٹہنی پُرانی۔

.39

لَا ٱلشَّمۡسُ يَنۢبَغِى لَهَآ أَن تُدۡرِكَ ٱلۡقَمَرَ وَلَا ٱلَّيۡلُ سَابِقُ ٱلنَّہَارِ‌ۚ

 نہ سورج کو پہنچے (بس میں ہے) کہ پکڑ لے چاند کو، اور نہ رات آگے بڑھے دن سے۔

وَكُلٌّ۬ فِى فَلَكٍ۬ يَسۡبَحُونَ   

اور ہر کوئی ایک گھیرے (مدار) میں پھرتے (گردش کرتے) ہیں۔

.40

وَءَايَةٌ۬ لَّهُمۡ أَنَّا حَمَلۡنَا ذُرِّيَّتَہُمۡ فِى ٱلۡفُلۡكِ ٱلۡمَشۡحُونِ 

 اور ایک نشانی ہے ان کو کہ ہم نے اُٹھا(سوار کر) لی ان کی نسل اس بھری کشتی میں۔

.41

وَخَلَقۡنَا لَهُم مِّن مِّثۡلِهِۦ مَا يَرۡكَبُونَ 

 اور بنا دیئے ہم نے ان کو اس طرح کے جس پر چڑھتے (سوار ہوتے) ہیں۔

.42

وَإِن نَّشَأۡ نُغۡرِقۡهُمۡ فَلَا صَرِيخَ لَهُمۡ وَلَا هُمۡ يُنقَذُونَ 

 اور اگر ہم چاہیں تو ان کو ڈبو (غرق کر) دیں، پھر کوئی نہ پہنچے ان کی فریاد کو، اور نہ وہ خلاص کئے (بچائے) جائیں۔

.43

إِلَّا رَحۡمَةً۬ مِّنَّا وَمَتَـٰعًا إِلَىٰ حِينٍ۬   

 مگر ہم اپنی مہر (رحمت) سے، اور کام چلانے کو ایک وقت (خاص) تک۔

.44

وَإِذَا قِيلَ لَهُمُ ٱتَّقُواْ مَا بَيۡنَ أَيۡدِيكُمۡ وَمَا خَلۡفَكُمۡ لَعَلَّكُمۡ تُرۡحَمُونَ 

 اور جب کہیئے ان کو، بچو اپنے سامنے آئے (عذاب) سے، اور اپنے پیچھے چھوڑے سے، شاید تم پر رحم ہو۔

.45

وَمَا تَأۡتِيہِم مِّنۡ ءَايَةٍ۬ مِّنۡ ءَايَـٰتِ رَبِّہِمۡ إِلَّا كَانُواْ عَنۡہَا مُعۡرِضِينَ 

 اور کوئی حکم نہیں پہنچتا ان کو اپنے رب کے حکموں سے جس کو ٹلا نہیں رہتے (منہ پھیر نہیں لیتے) ۔

.46

وَإِذَا قِيلَ لَهُمۡ أَنفِقُواْ مِمَّا رَزَقَكُمُ ٱللَّهُ

 اور جب کہئے ان کو خرچ کرو (اس میں سے جو) کچھ اﷲ کا دیا،

قَالَ ٱلَّذِينَ ڪَفَرُواْ لِلَّذِينَ ءَامَنُوٓاْأَنُطۡعِمُ مَن لَّوۡ يَشَآءُ ٱللَّهُ أَطۡعَمَهُ ۥۤ

کہتے ہیں منکر ایمان والوں کو، ہم کھلائیں ایسے کو کہ اﷲ چاہتا تو اس کو کھلاتا،

إِنۡ أَنتُمۡ إِلَّا فِى ضَلَـٰلٍ۬ مُّبِينٍ۬   

تم لوگ تو نرے بہک رہے ہو۔

.47

وَيَقُولُونَ مَتَىٰ هَـٰذَا ٱلۡوَعۡدُ إِن كُنتُمۡ صَـٰدِقِينَ 

 اور کہتے ہیں کب ہے یہ وعدہ اگر تم سچے ہو؟

.48

مَا يَنظُرُونَ إِلَّا صَيۡحَةً۬ وَٲحِدَةً۬ تَأۡخُذُهُمۡ وَهُمۡ يَخِصِّمُونَ 

یہی راہ دیکھتے ہیں ایک چنگھاڑ کی، جو ان کو پکڑے گی، جب آپس میں جھگڑ رہے ہوں گے۔

.49

فَلَا يَسۡتَطِيعُونَ تَوۡصِيَةً۬ وَلَآ إِلَىٰٓ أَهۡلِهِمۡ يَرۡجِعُونَ 

پھر نہ سکیں گے کہ کچھ کہہ مریں (وصیحت کریں) اور نہ اپنے گھر کو پھر جائیں (لوٹ سکیں) گے۔

.50

وَنُفِخَ فِى ٱلصُّورِ فَإِذَا هُم مِّنَ ٱلۡأَجۡدَاثِ إِلَىٰ رَبِّهِمۡ يَنسِلُونَ   

 اور پھونکا جائے نر سنگا، پھر تبھی وہ قبروں سے اپنے رب کی طرف پھیل پڑیں گے۔

.51

قَالُواْ يَـٰوَيۡلَنَا مَنۢ بَعَثَنَا مِن مَّرۡقَدِنَاۜ‌ۗ

 کہیں گے اے خرابی (بدبختی) ہماری! کس نے اٹھا دیا ہم کو ہماری نیند کی جگہ (خواب گاہوں) سے۔

هَـٰذَا مَا وَعَدَ ٱلرَّحۡمَـٰنُ وَصَدَقَ ٱلۡمُرۡسَلُونَ   

یہ (تو) وہ ہے جو وعدہ دیا تھا رحمٰن نے،اور سچ کہا تھا بھیجے ہوؤں (رسولوں) نے۔

.52

إِن ڪَانَتۡ إِلَّا صَيۡحَةً۬ وَٲحِدَةً۬ فَإِذَا هُمۡ جَمِيعٌ۬ لَّدَيۡنَا مُحۡضَرُونَ   

یہی ہو گی ایک چنگھاڑ، پھر تبھی وہ سارے ہمارے پاس پکڑے آئے۔

.53

فَٱلۡيَوۡمَ لَا تُظۡلَمُ نَفۡسٌ۬ شَيۡـًٔ۬اوَلَا تُجۡزَوۡنَ إِلَّا مَا ڪُنتُمۡ تَعۡمَلُونَ   

پھر آج کے دن ظلم نہ ہو گا کسی جی پر کچھ،اور وہی بدلہ پاؤ گے جو کرتے تھے ۔

.54

إِنَّ أَصۡحَـٰبَ ٱلۡجَنَّةِ ٱلۡيَوۡمَ فِى شُغُلٍ۬ فَـٰكِهُونَ   

تحقیق (بلاشبہ) بہشت کے لوگ آج ایک دھندے (دلچسپی) میں ہیں باتیں کرتے۔

.55

هُمۡ وَأَزۡوَٲجُهُمۡ فِى ظِلَـٰلٍ عَلَى ٱلۡأَرَآٮِٕكِ مُتَّكِـُٔونَ   

 وہ اور انکی عورتیں (بیویاں) سایوں میں تختوں پر بیٹھے ہیں تکیے لگائے۔

.56

لَهُمۡ فِيہَا فَـٰكِهَةٌ۬ وَلَهُم مَّا يَدَّعُونَ   

 ان کو وہاں ہے میوہ اور ان کو ہے (ملے گی ہر وہ چیز) جو مانگ لیں۔

.57

سَلَـٰمٌ۬ قَوۡلاً۬ مِّن رَّبٍّ۬ رَّحِيمٍ۬   

 سلام بولنا ہے رب مہربان سے۔

.58

وَٱمۡتَـٰزُواْ ٱلۡيَوۡمَ أَيُّہَا ٱلۡمُجۡرِمُونَ 

 اور تم الگ ہو جاؤ آج اے گنہگارو!

.59

أَلَمۡ أَعۡهَدۡ إِلَيۡكُمۡ يَـٰبَنِىٓ ءَادَمَ أَن لَّا تَعۡبُدُواْ ٱلشَّيۡطَـٰنَ‌ۖ

میں نے نہ کہہ رکھا تھا تم کو؟ اے آدم کی اولاد! کہ نہ پوجو شیطان کو۔

إِنَّهُ ۥ لَكُمۡ عَدُوٌّ۬ مُّبِينٌ۬   

وہ کھلا دشمن ہے تمہارا ۔

.60

وَأَنِ ٱعۡبُدُونِى‌ۚ هَـٰذَا صِرَٲطٌ۬ مُّسۡتَقِيمٌ۬   

اور یہ کہ پوجو مجھ کو ، یہ راہ ہے سیدھی۔

.61

وَلَقَدۡ أَضَلَّ مِنكُمۡ جِبِلاًّ۬ كَثِيرًا‌ۖ

 اور وہ بہکا لے گیا تم میں سے بہت خلق (مخلوق) کو۔

أَفَلَمۡ تَكُونُواْ تَعۡقِلُونَ   

پھر کیا تم کو بُوجھ (عقل) نہ تھی؟

.62

هَـٰذِهِۦ جَهَنَّمُ ٱلَّتِى كُنتُمۡ تُوعَدُونَ   

 یہ دوزخ ہے جس کا تم کو وعدہ تھا۔

.63

ٱصۡلَوۡهَا ٱلۡيَوۡمَ بِمَا كُنتُمۡ تَكۡفُرُونَ   

پیٹھو (داخل ہو جاؤ) اس میں آج کے دن بدلہ اپنے کفر کا۔

.64

ٱلۡيَوۡمَ نَخۡتِمُ عَلَىٰٓ أَفۡوَٲهِهِمۡ

آج ہم مہر (نقش) کر دیں گے اُن کے منہ پر،

وَتُكَلِّمُنَآ أَيۡدِيہِمۡ وَتَشۡہَدُ أَرۡجُلُهُم بِمَا كَانُواْ يَكۡسِبُونَ 

اور بولیں گے ہم سے اُن کے ہاتھ، اور بتائیں گے ان کے پاؤں، جو کچھ وہ کماتے تھے۔

.65

وَلَوۡ نَشَآءُ لَطَمَسۡنَا عَلَىٰٓ أَعۡيُنِہِمۡ فَٱسۡتَبَقُواْ ٱلصِّرَٲطَ فَأَنَّىٰ يُبۡصِرُونَ 

 اور اگر ہم چاہیں مٹا دیں ان کی آنکھیں،پھر دوڑیں راہ لینے کو، پھر کہاں سے سوجھے۔

.66

وَلَوۡ نَشَآءُ لَمَسَخۡنَـٰهُمۡ عَلَىٰ مَڪَانَتِهِمۡ فَمَا ٱسۡتَطَـٰعُواْ مُضِيًّ۬ا وَلَا يَرۡجِعُونَ 

 اور اگر ہم چاہیں صورت بدل دیں اُن کی جہاں کی تھاں(اسی جگہ) ،پھر نہ سکیں گے (آگے) چلنا، نہ وہ اُلٹے پھریں۔

.67

وَمَن نُّعَمِّرۡهُ نُنَڪِّسۡهُ فِى ٱلۡخَلۡقِ‌ۖ

 اور جس کو ہم الٹا کریں(لمبی عمر دیں) ، اوندھا (الٹ) کریں خِلقت (ساخت) میں۔

أَفَلَا يَعۡقِلُونَ  

پھر کیا بُوجھ نہیں رکھتے۔

.68

وَمَا عَلَّمۡنَـٰهُ ٱلشِّعۡرَ وَمَا يَنۢبَغِى لَهُ ۥۤ‌ۚ

 اور ہم نے نہیں سکھایا اسکو شعر کہنا، اور یہ اسکے لائق (شایانِ شان) نہیں،

إِنۡ هُوَ إِلَّا ذِكۡرٌ۬ وَقُرۡءَانٌ۬ مُّبِينٌ۬   

یہ تو نری سمجھوتی (نصیحت) ہے اور قرآن ہے صاف (پڑھا جانے والا) ۔

.69

لِّيُنذِرَ مَن كَانَ حَيًّ۬اوَيَحِقَّ ٱلۡقَوۡلُ عَلَى ٱلۡكَـٰفِرِينَ 

 تا (کہ) ڈر سنائے اس کو جس میں جان (زندہ) ہو، اور ثابت ہو بات (حجت ہو) منکروں پر۔

.70

أَوَلَمۡ يَرَوۡاْ أَنَّا خَلَقۡنَا لَهُم مِّمَّا عَمِلَتۡ أَيۡدِينَآ أَنۡعَـٰمً۬افَهُمۡ لَهَا مَـٰلِكُونَ 

 اور کیا نہیں دیکھتے کہ ہم نے بنا دیئے ان کو(پیدا کئے انکے لئے) اپنے ہاتھوں بنائے سے چوپائے،پھر وہ ان کا مال ہیں۔

.71

وَذَلَّلۡنَـٰهَا لَهُمۡ فَمِنۡہَا رَكُوبُہُمۡ وَمِنۡہَا يَأۡكُلُونَ 

 اور عاجز کر دیا ان کو ان کے آگے، پھر ان میں کوئی ہے ان کی سواری اور کسی کو کھاتے ہیں۔

.72

وَلَهُمۡ فِيہَا مَنَـٰفِعُ وَمَشَارِبُ‌ۖ

 اور ان کو ان میں فائدے ہیں، اور پینے کے گھاٹ (مشروبات) ۔

أَفَلَا يَشۡكُرُونَ   

پھر کیوں شکر نہیں کرتے؟

.73

وَٱتَّخَذُواْ مِن دُونِ ٱللَّهِ ءَالِهَةً۬ لَّعَلَّهُمۡ يُنصَرُونَ 

 اور پکڑے ہیں اﷲ کے سوا اور حاکم کہ شاید ان کو مدد پہنچے۔

.74

لَا يَسۡتَطِيعُونَ نَصۡرَهُمۡ وَهُمۡ لَهُمۡ جُندٌ۬ مُّحۡضَرُونَ 

 نہ سکیں گے ان کی مدد کرنی اور یہ ان کی فوج ہو کر پکڑے آئیں گے۔

.75

فَلَا يَحۡزُنكَ قَوۡلُهُمۡ‌ۘ

 اب تُو غم نہ کھا ان کی بات سے۔

إِنَّا نَعۡلَمُ مَا يُسِرُّونَ وَمَا يُعۡلِنُونَ   

ہم جانتے ہیں جو چھپاتے ہیں اور جو کھولتے ہیں۔

.76

أَوَلَمۡ يَرَ ٱلۡإِنسَـٰنُ أَنَّا خَلَقۡنَـٰهُ مِن نُّطۡفَةٍ۬ فَإِذَا هُوَ خَصِيمٌ۬ مُّبِينٌ۬ 

کیا دیکھتا نہیں آدمی کہ ہم نے اسکو بنایا ایک بوند سے، پھر تبھی وہ ہو گیا جھگڑتا بولتا۔

.77

وَضَرَبَ لَنَا مَثَلاً۬ وَنَسِىَ خَلۡقَهُ ۥ‌ۖ

 اور بٹھاتا (چسپاں کرتا) ہے ہم پر کہاوت، اور بھول گیا اپنی پیدائش۔

قَالَ مَن يُحۡىِ ٱلۡعِظَـٰمَ وَهِىَ رَمِيمٌ۬   

کہنے لگا کون جلاوے (زندہ کرے) گا ہڈیاں جب کھوکھری (بوسیدہ) ہو گئیں۔

.78

قُلۡ يُحۡيِيہَا ٱلَّذِىٓ أَنشَأَهَآ أَوَّلَ مَرَّةٍ۬‌ۖ

 تُو کہہ ان کو جلاوے (زندہ کرے) گا جس نے بنایا اُن کو پہلی بار۔

وَهُوَ بِكُلِّ خَلۡقٍ عَلِيمٌ   

اور وہ سب بنانا جانتا ہے۔

.79

ٱلَّذِى جَعَلَ لَكُم مِّنَ ٱلشَّجَرِ ٱلۡأَخۡضَرِ نَارً۬افَإِذَآ أَنتُم مِّنۡهُ تُوقِدُونَ 

(وہی) جس نے بنا دی تم کو سبز درخت سے آگ۔ پھر اب تم اسی سے سلگاتے ہو۔

.80

أَوَلَيۡسَ ٱلَّذِى خَلَقَ ٱلسَّمَـٰوَٲتِ وَٱلۡأَرۡضَ بِقَـٰدِرٍ عَلَىٰٓ أَن يَخۡلُقَ مِثۡلَهُم‌ۚ

 کیا جس نے بنائے آسمان اور زمین، نہیں سکتا کہ بنادے ایسے آدمی؟

بَلَىٰ وَهُوَ ٱلۡخَلَّـٰقُ ٱلۡعَلِيمُ   

کیوں نہیں! اور وہ ہے اصل بنانے والا سب جانتا۔

.81

إِنَّمَآ أَمۡرُهُ ۥۤ إِذَآ أَرَادَ شَيۡـًٔا أَن يَقُولَ لَهُ ۥ كُن فَيَكُونُ 

 اس کا حکم یہی ہے، جب چاہے کسی چیز کو، کہ کہے اس کو ہو ، وہ ہو جائے۔

.82

فَسُبۡحَـٰنَ ٱلَّذِى بِيَدِهِۦ مَلَكُوتُ كُلِّ شَىۡءٍ۬ وَإِلَيۡهِ تُرۡجَعُونَ 

سو پاک ہے وہ ذات جس کے ہاتھ ہے حکومت ہر چیز کی، اور اسی کی طرف پھر (پلٹ) جاؤ گے۔

*********

.83

Copy Rights:

Zahid Javed Rana, Abid Javed Rana, Lahore, Pakistan

Visits wef 2016

AmazingCounters.com