القرآن الحکیم (اردو ترجمہ)

حضرت شاہ عبدالقادر

سورۃ ص

Previous           Index           Next

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ

 

صٓ‌ۚ

ص،

وَٱلۡقُرۡءَانِ ذِى ٱلذِّكۡرِ   

قسم ہے اس قرآن سمجھانے والے کی۔

.1

بَلِ ٱلَّذِينَ كَفَرُواْ فِى عِزَّةٍ۬ وَشِقَاقٍ۬ 

بلکہ جو لوگ منکر ہیں غرور میں ہیں اور مقابلہ میں۔

.2

كَمۡ أَهۡلَكۡنَا مِن قَبۡلِهِم مِّن قَرۡنٍ۬

بہت کھپا (ہلاک کر) دیں ہم نے ان سے پہلے سنگتیں (قومیں) ،

فَنَادَواْ وَّلَاتَ حِينَ مَنَاصٍ۬ 

پھر لگے پکارنے، اور وقت نہ رہا خلاصی (بچنے) کا۔

.3

وَعَجِبُوٓاْ أَن جَآءَهُم مُّنذِرٌ۬ مِّنۡہُمۡ‌ۖ

اور اچنبھا (تعجب) کرنے لگے اس پر، کہ آیا ان کو ایک ڈر سنانے والا انہی میں سے۔

وَقَالَ ٱلۡكَـٰفِرُونَ هَـٰذَا سَـٰحِرٌ۬ كَذَّابٌ

اور لگے کہنے منکر یہ جادوگر ہے جھوٹا۔

.4

أَجَعَلَ ٱلۡأَلِهَةَ إِلَـٰهً۬ا وَٲحِدًا‌ۖ

  کیا اس نے کر دی اتنوں کی بندگی کے بدل ایک ہی کی بندگی؟

إِنَّ هَـٰذَا لَشَىۡءٌ عُجَابٌ۬

یہ بھی ہے بڑے تعجب کی بات۔

.5

وَٱنطَلَقَ ٱلۡمَلَأُ مِنۡہُمۡ أَنِ ٱمۡشُواْ وَٱصۡبِرُواْ عَلَىٰٓ ءَالِهَتِكُمۡ‌ۖ

اور چل کھڑے ہوئے کتنے پنچ (سردار) ان میں کہ چلو اور ٹھہرے رہو اپنے ٹھاکروں (معبودوں) پر۔

إِنَّ هَـٰذَا لَشَىۡءٌ۬ يُرَادُ 

بیشک اس بات میں (کہ الہٰ ایک ہے) کچھ غرض (مقصد) ہے۔

.6

مَا سَمِعۡنَا بِہَـٰذَا فِى ٱلۡمِلَّةِ ٱلۡأَخِرَةِ إِنۡ هَـٰذَآ إِلَّا ٱخۡتِلَـٰقٌ

یہ نہیں سنا ہم نے اس پچھلے دین (ملت) میں۔اور کچھ نہیں! یہ بنائی (من گھڑت) بات ہے۔

.7

أَءُنزِلَ عَلَيۡهِ ٱلذِّكۡرُ مِنۢ بَيۡنِنَا‌ۚ

  کیا اسی پراُتری سمجھوتی(ذکر) ہم سب میں سے؟

بَلۡ هُمۡ فِى شَكٍّ۬ مِّن ذِكۡرِى‌ۖ

کوئی نہیں! ان کو دھوکا ہے میری نصیحت میں۔

بَل لَّمَّا يَذُوقُواْ عَذَابِ

کوئی نہیں! ابھی چکھی نہیں میری مار۔

.8

أَمۡ عِندَهُمۡ خَزَآٮِٕنُ رَحۡمَةِ رَبِّكَ

  کیا ان کے پاس ہیں خزانے تیرے رب کی مہر (رحمت) کے؟

ٱلۡعَزِيزِ ٱلۡوَهَّابِ 

جو زبردست ہے بخشنے والا۔

.9

أَمۡ لَهُم مُّلۡكُ ٱلسَّمَـٰوَٲتِ وَٱلۡأَرۡضِ وَمَا بَيۡنَہُمَا‌ۖ

 یا ان کی حکومت ہے آسمانوں میں اور زمین میں اور جو ان کے بیچ ہے؟

فَلۡيَرۡتَقُواْ فِى ٱلۡأَسۡبَـٰبِ 

تو چاہیئے چڑھ جائیں رسی تان کر۔

.10

جُندٌ۬ مَّا هُنَالِكَ مَهۡزُومٌ۬ مِّنَ ٱلۡأَحۡزَابِ 

ایک لشکر یہ ہے وہاں تباہ ہوا ان سب لشکروں میں۔

.11

كَذَّبَتۡ قَبۡلَهُمۡ قَوۡمُ نُوحٍ۬ وَعَادٌ۬ وَفِرۡعَوۡنُ ذُو ٱلۡأَوۡتَادِ 

جھٹلا چکے ہیں ان سے پہلے، نوح کی قوم اور عاد اور ثمود اور فرعون میخوں والا۔

.12

وَثَمُودُ وَقَوۡمُ لُوطٍ۬ وَأَصۡحَـٰبُ لۡـَٔيۡكَةِ‌ۚ

اور ثمود اور لوط کی قوم اور ایکہ کے لوگ۔

أُوْلَـٰٓٮِٕكَ ٱلۡأَحۡزَابُ 

وہ فوجیں (جنہوں نے شکست کھائی تھی) ۔

.13

إِن كُلٌّ إِلَّا ڪَذَّبَ ٱلرُّسُلَ فَحَقَّ عِقَابِ 

یہ جتنے تھے، سب نے یہی جھٹلایا رسولوں کو، پھر ثابت ہوئی میری طرف سے سزا۔

.14

وَمَا يَنظُرُ هَـٰٓؤُلَآءِ إِلَّا صَيۡحَةً۬ وَٲحِدَةً۬ مَّا لَهَا مِن فَوَاقٍ۬ 

 اور راہ نہیں دیکھتے یہ لوگ بھی، مگر یہی ایک چنگھاڑ کی، جو بیچ میں دم نہ لے گی۔

.15

وَقَالُواْ رَبَّنَا عَجِّل لَّنَا قِطَّنَا قَبۡلَ يَوۡمِ ٱلۡحِسَابِ 

اور کہتے ہیں اے رب شتاب (جلدی) دے ہم کو چھٹی ہماری (حصہ ہمارا) ، پہلے (ہی) حساب کے دن سے۔

.16

ٱصۡبِرۡ عَلَىٰ مَا يَقُولُونَ وَٱذۡكُرۡ عَبۡدَنَا دَاوُ ۥدَ ذَا ٱلۡأَيۡدِ‌ۖ

 تُو سہتا رہ (صبر کر ) جو کہتے رہیں اور یاد کر ہمارے بندے داؤد کو، ہاتھ کے بل (بہت قوتوں) والا،

إِنَّهُ ۥۤ أَوَّابٌ 

وہ تھا رجوع رہنے والا۔

.17

إِنَّا سَخَّرۡنَا ٱلۡجِبَالَ مَعَهُ ۥ يُسَبِّحۡنَ بِٱلۡعَشِىِّ وَٱلۡإِشۡرَاقِ 

 ہم نے تابع کئے پہاڑ،اس کے ساتھ پاکی بولتے (تسبیح کرتے) شام کو اور صبح کو۔

.18

وَٱلطَّيۡرَ مَحۡشُورَةً۬‌ۖ

اور اڑتے جانور جمع ہو کر۔

كُلٌّ۬ لَّهُ ۥۤ أَوَّابٌ۬ 

سب تھے اس کے آگے رجوع  (تابع)رہتے۔

.19

وَشَدَدۡنَا مُلۡكَهُ ۥوَءَاتَيۡنَـٰهُ ٱلۡحِكۡمَةَ وَفَصۡلَ ٱلۡخِطَابِ 

 اور زور دیا (مستحکم کیا) ہم نے اسکی سلطنت کو، اور دی اسکو تدبیر اور فیصلہ بات کا۔

.20

وَهَلۡ أَتَٮٰكَ نَبَؤُاْ ٱلۡخَصۡمِ إِذۡ تَسَوَّرُواْ ٱلۡمِحۡرَابَ 

اور پہنچی ہے تجھ کو خبر دعوے والوں کی، جب دیوار کود کر آئے عبادت خانے میں۔

.21

إِذۡ دَخَلُواْ عَلَىٰ دَاوُ ۥدَ فَفَزِعَ مِنۡہُمۡ‌ۖ

جب پیٹھ (چلے) آئے داؤد پاس تو ان سے گھبرایا،

قَالُواْ لَا تَخَفۡ‌ۖ

وہ بولے مت گھبرا۔

خَصۡمَانِ بَغَىٰ بَعۡضُنَا عَلَىٰ بَعۡضٍ۬ فَٱحۡكُم بَيۡنَنَا بِٱلۡحَقِّ وَلَا تُشۡطِطۡ

ہم دو جھگڑتے ہیں، زیادتی کی ہے ایک نے دوسرے پر، سو فیصلہ کر دے ہم میں انصاف کا،

وَٱهۡدِنَآ إِلَىٰ سَوَآءِ ٱلصِّرَٲطِ 

اور دُور نہ ڈال بات کو، اور بتا دے ہم کو سیدھی راہ۔

.22

إِنَّ هَـٰذَآ أَخِى لَهُ ۥ تِسۡعٌ۬ وَتِسۡعُونَ نَعۡجَةً۬ وَلِىَ نَعۡجَةٌ۬ وَٲحِدَةٌ۬

یہ جو ہے بھائی ہے میرا اس کے ہاں ہیں ننانوے دُنبیاں اور میرے ہاں ایک دُنبی۔

فَقَالَ أَكۡفِلۡنِيہَا وَعَزَّنِى فِى ٱلۡخِطَابِ 

پھر کہتا ہے، حوالے کر دو مجھ کو وہ اور زبردستی کرتا ہے مجھ سے بات میں۔

.23

قَالَ لَقَدۡ ظَلَمَكَ بِسُؤَالِ نَعۡجَتِكَ إِلَىٰ نِعَاجِهِۦ‌ۖ

بولا وہ بے انصافی کرتا ہے تجھ پر، کہ مانگتا ہے تیری دُنبی، ملانے کو اپنی دُنبیوں میں۔

وَإِنَّ كَثِيرً۬ا مِّنَ ٱلۡخُلَطَآءِ لَيَبۡغِى بَعۡضُہُمۡ عَلَىٰ بَعۡضٍ

اور اکثر شریک زیادتی کرتے ہیں ایک دوسرے پر،

إِلَّا ٱلَّذِينَ ءَامَنُواْ وَعَمِلُواْ ٱلصَّـٰلِحَـٰتِ وَقَلِيلٌ۬ مَّا هُمۡ‌ۗ

مگر جو یقین لائے اور کام کئے اچھے، اور تھوڑے ہیں ویسے۔

وَظَنَّ دَاوُ ۥدُ أَنَّمَا فَتَنَّـٰهُ

اور خیال میں آیا داؤد کے کہ ہم نے اسکو جانچا(آزمایا ہے) ،

فَٱسۡتَغۡفَرَ رَبَّهُ ۥ وَخَرَّ رَاكِعً۬ا وَأَنَابَ 

پھر گناہ بخشوانے لگا اپنے رب سے، اور گرا جھک کراور رجوع ہوا۔ (سجدہ)

.24

فَغَفَرۡنَا لَهُ ۥ ذَٲلِكَ‌ۖ

پھر ہم نے معاف کر دیا ا س کو وہ کام ،

وَإِنَّ لَهُ ۥ عِندَنَا لَزُلۡفَىٰ وَحُسۡنَ مَـَٔابٍ۬  

اور اس کو ہمارے پاس مرتبہ ہے،اور اچھا ٹھکانا۔

.25

يَـٰدَاوُ ۥدُ إِنَّا جَعَلۡنَـٰكَ خَلِيفَةً۬ فِى ٱلۡأَرۡضِ فَٱحۡكُم بَيۡنَ ٱلنَّاسِ بِٱلۡحَقِّ

 اے داؤد! ہم نے کیا تجھ کو نائب مُلک میں،سو تو حکومت کر لوگوں میں انصاف سے،

وَلَا تَتَّبِعِ ٱلۡهَوَىٰ فَيُضِلَّكَ عَن سَبِيلِ ٱللَّهِ‌ۚ

اور نہ چل جی کی راہ (خواہشِ نفس) پر، پھر تجھ کو بچلاوے (بھٹکائے) اﷲ کی راہ سے۔

إِنَّ ٱلَّذِينَ يَضِلُّونَ عَن سَبِيلِ ٱللَّهِ لَهُمۡ عَذَابٌ۬ شَدِيدُۢ بِمَا نَسُواْ يَوۡمَ ٱلۡحِسَابِ 

مقرر (بیشک) جو لوگ بچلتے (بھٹکتے) ہیں اﷲ کی راہ سے، انکو سخت مار ہے،اس پر کہ بھلا دیا دن حساب کا۔

.26

وَمَا خَلَقۡنَا ٱلسَّمَآءَ وَٱلۡأَرۡضَ وَمَا بَيۡنَہُمَا بَـٰطِلاً۬‌ۚ

 اور ہم نے نہیں بنایا آسمان اور زمین کو، اور جو ان کے بیچ ہے نکمّا،

ذَٲلِكَ ظَنُّ ٱلَّذِينَ كَفَرُواْ‌ۚ

یہ خیال ہے ان کا جو منکر ہیں،

فَوَيۡلٌ۬ لِّلَّذِينَ كَفَرُواْ مِنَ ٱلنَّارِ 

سو خرابی ہے منکروں کو آگ سے۔

.27

أَمۡ نَجۡعَلُ ٱلَّذِينَ ءَامَنُواْ وَعَمِلُواْ ٱلصَّـٰلِحَـٰتِ كَٱلۡمُفۡسِدِينَ فِى ٱلۡأَرۡضِ

  کیا ہم کریں گے ایمان والوں کو جو کرتے ہیں نیکیاں، برابر انکے جو خرابی ڈالیں ملک میں؟

أَمۡ نَجۡعَلُ ٱلۡمُتَّقِينَ كَٱلۡفُجَّارِ

کیا ہم کریں گے ڈر والوں کو برابر ڈھیٹھ لوگوں کے؟

.28

كِتَـٰبٌ أَنزَلۡنَـٰهُ إِلَيۡكَ مُبَـٰرَكٌ۬ لِّيَدَّبَّرُوٓاْ ءَايَـٰتِهِۦ

 ایک کتاب ہے، جو اُتاری ہم نے تیری طرف برکت کی،

وَلِيَتَذَكَّرَ أُوْلُواْ ٱلۡأَلۡبَـٰبِ 

تا (کہ) دھیان کریں لوگ اس کی باتیں، اور تا (کہ) سمجھیں عقل والے۔

.29

وَوَهَبۡنَا لِدَاوُ ۥدَ سُلَيۡمَـٰنَ‌ۚ

 اور دیا ہم نے داؤد کو سلیمان ۔

نِعۡمَ ٱلۡعَبۡدُ‌ۖ إِنَّهُ ۥۤ أَوَّابٌ 

بہت خوب بندہ۔ وہ ہے رجوع رہنے والا۔

.30

إِذۡ عُرِضَ عَلَيۡهِ بِٱلۡعَشِىِّ ٱلصَّـٰفِنَـٰتُ ٱلۡجِيَادُ 

جب دکھانے کو آئے اس کے سامنے شام کو گھوڑے خاصے۔

.31

فَقَالَ إِنِّىٓ أَحۡبَبۡتُ حُبَّ ٱلۡخَيۡرِ عَن ذِكۡرِ رَبِّى حَتَّىٰ تَوَارَتۡ بِٱلۡحِجَابِ 

تو بولا میں نے چاہی محبت مال کی اپنے رب کی یاد سے۔ یہاں تک کہ چھُپ گیا اوٹ میں۔

.32

رُدُّوهَا عَلَىَّ‌ۖ

 پھیر (واپس) لاؤ ان کو میرے پاس۔

فَطَفِقَ مَسۡحَۢا بِٱلسُّوقِ وَٱلۡأَعۡنَاقِ 

پھر لگا جھاڑنے پنڈلیاں اور گردنیں۔

.33

وَلَقَدۡ فَتَنَّا سُلَيۡمَـٰنَ وَأَلۡقَيۡنَا عَلَىٰ كُرۡسِيِّهِۦ جَسَدً۬ا

اور ہم نے جانچا (آزمایا) سلیمان کو،اور ڈال دیا اس کے تخت پر ایک دھڑ،

ثُمَّ أَنَابَ 

پھر وہ رجوع ہوا۔

.34

قَالَ رَبِّ ٱغۡفِرۡ لِى وَهَبۡ لِى مُلۡكً۬ا لَّا يَنۢبَغِى لِأَحَدٍ۬ مِّنۢ بَعۡدِىٓ‌ۖ

بولا اے رب میرے! معاف کر مجھ کو ، اور بخش مجھ کو وہ بادشاہی، کہ نہ چاہیئے کسی کو میرے پیچھے۔

إِنَّكَ أَنتَ ٱلۡوَهَّابُ 

بیشک تو ہے بخشنے والا۔

.35

فَسَخَّرۡنَا لَهُ ٱلرِّيحَ تَجۡرِى بِأَمۡرِهِۦ رُخَآءً حَيۡثُ أَصَابَ 

 پھر ہم نے تابع کی اسکے باؤ(ہوا) ، چلتی اسکے حکم سے نرم نرم، جہاں پہنچا چاہتا۔

.36

وَٱلشَّيَـٰطِينَ كُلَّ بَنَّآءٍ۬ وَغَوَّاصٍ۬ 

 اور تابع کئے شیطان سارے،عمارت کرنے (بنانے) والے اور غوطے لگانے والے۔

.37

وَءَاخَرِينَ مُقَرَّنِينَ فِى ٱلۡأَصۡفَادِ 

اور کتنے اور بندھے ہوئے بیڑیوں میں۔

.38

هَـٰذَا عَطَآؤُنَافَٱمۡنُنۡ أَوۡ أَمۡسِكۡ بِغَيۡرِ حِسَابٍ۬ 

یہ ہے بخشش ہماری،اب تُو احسان کر یا رکھ چھوڑ کچھ نہیں حساب۔

.39

وَإِنَّ لَهُ ۥ عِندَنَا لَزُلۡفَىٰ وَحُسۡنَ مَـَٔابٍ۬ 

اور اس کو ہمارے پاس مرتبہ ہے اور اچھا ٹھکانا۔

.40

وَٱذۡكُرۡ عَبۡدَنَآ أَيُّوبَ

 اور یاد کر ہمارے بندے ایوب کو،

إِذۡ نَادَىٰ رَبَّهُ ۥۤ أَنِّى مَسَّنِىَ ٱلشَّيۡطَـٰنُ بِنُصۡبٍ۬ وَعَذَابٍ 

جب پکارا اپنے رب کو کہ مجھ کو لگا دی شیطان نے ایذا اور تکلیف۔

.41

ٱرۡكُضۡ بِرِجۡلِكَ‌ۖ

 لات مار اپنے پاؤں سے،

هَـٰذَا مُغۡتَسَلُۢ بَارِدٌ۬ وَشَرَابٌ۬ 

یہ چشمہ نکلا نہانے کو ٹھنڈا (پانی) اور پینے کو۔

.42

وَوَهَبۡنَا لَهُ ۥۤ أَهۡلَهُ ۥ وَمِثۡلَهُم مَّعَهُمۡ رَحۡمَةً۬ مِّنَّا

 اور دیئے ہم نے اسکو اسکے گھر والے، اور انکے برابر انکے ساتھ (اور) اپنی طرف کی مہر (رحمت) سے،

وَذِكۡرَىٰ لِأُوْلِى ٱلۡأَلۡبَـٰبِ 

اور یاد رہنے کو عقل والوں کے۔

.43

وَخُذۡ بِيَدِكَ ضِغۡثً۬ا فَٱضۡرِب بِّهِۦ وَلَا تَحۡنَثۡ‌ۗ

اور پکڑ اپنے ہاتھ میں سینکوں (تنکوں) کا مٹھا(گھٹا) ، پھر ان سے مار لے، اور قسم میں جھوٹا نہ ہو۔

إِنَّا وَجَدۡنَـٰهُ صَابِرً۬ا‌ۚ

ہم نے اس کو پایا سہارنے (صبر کرنے) والا،

نِّعۡمَ ٱلۡعَبۡدُ‌ۖ إِنَّهُ ۥۤ أَوَّابٌ۬ 

 بہت خوب بندہ، وہ ہے رجوع رہنے والا۔

.44

وَٱذۡكُرۡ عِبَـٰدَنَآ إِبۡرَٲهِيمَ وَإِسۡحَـٰقَ وَيَعۡقُوبَ أُوْلِى ٱلۡأَيۡدِى وَٱلۡأَبۡصَـٰرِ 

اور یاد کر ہمارے بندے کو، ابراہیم اور اسحٰق اور یعقوب،

 (جو تھے) ہاتھوں (قوت)والے اور آنکھوں (بصیرت) والے۔

.45

إِنَّآ أَخۡلَصۡنَـٰهُم بِخَالِصَةٍ۬ ذِڪۡرَى ٱلدَّارِ 

ہم نے امتیاز دیا ان کو ایک چنی بات (خاص صفت) کا، وہ یاد اس (آخرت کے) گھر کی۔

.46

وَإِنَّہُمۡ عِندَنَا لَمِنَ ٱلۡمُصۡطَفَيۡنَ ٱلۡأَخۡيَارِ 

اور وہ سب ہمارے پاس ہیں چُنے نیک لوگوں میں۔

.47

وَٱذۡكُرۡ إِسۡمَـٰعِيلَ وَٱلۡيَسَعَ وَذَا ٱلۡكِفۡلِ‌ۖ وَكُلٌّ۬ مِّنَ ٱلۡأَخۡيَارِ 

اور یاد کر اسمٰعیل کو اور الیسع کو اور ذوالکفل کو۔اور ہر ایک تھا خوبی والا۔

.48

هَـٰذَا ذِكۡرٌ۬‌ۚ

یہ ایک مذکور ہو چکا،

وَإِنَّ لِلۡمُتَّقِينَ لَحُسۡنَ مَـَٔابٍ۬ 

اور تحقیق (بیشک) ڈر والوں(متقیوں) کو ہے اچھا ٹھکانا۔

.49

جَنَّـٰتِ عَدۡنٍ۬ مُّفَتَّحَةً۬ لَّهُمُ ٱلۡأَبۡوَٲبُ  

باغ ہیں بسنے کو، کھول رکھے ان کے واسطے دروازے۔

.50

مُتَّكِـِٔينَ فِيہَا يَدۡعُونَ فِيہَا بِفَـٰكِهَةٍ۬ ڪَثِيرَةٍ۬ وَشَرَابٍ۬

 تکیہ لگائے بیٹھے ان میں، منگواتے ہیں ان میں میوے بہت اور شراب۔

.51

وَعِندَهُمۡ قَـٰصِرَٲتُ ٱلطَّرۡفِ أَتۡرَابٌ 

اور ان کے پاس عورتیں ہیں نیچی نگاہ والیاں ایک عمر کی۔

.52

هَـٰذَا مَا تُوعَدُونَ لِيَوۡمِ ٱلۡحِسَابِ 

یہ وہ ہے جو تم کو وعدہ ملتا ہے حساب کے دن پر۔

.53

إِنَّ هَـٰذَا لَرِزۡقُنَا مَا لَهُ ۥ مِن نَّفَادٍ 

یہ ہے روزی ہماری دی اس کو (کبھی) نہیں نبڑنا (ختم ہونا) ۔

.54

هَـٰذَا‌ۚ

یہ سن چکے(متقیوں کا انجام) !

وَإِنَّ لِلطَّـٰغِينَ لَشَرَّ مَـَٔابٍ۬ 

اور تحقیق (بلاشبہ) شریروں (سرکشوں) کے واسطے ہے بُرا ٹھکانا۔

.55

جَهَنَّمَ يَصۡلَوۡنَہَا فَبِئۡسَ ٱلۡمِهَادُ 

(یہ) دوزخ ہےجس میں پیٹھیں (جھلسائے جائیں) گے۔ سو کیا بُری تیاری ہے۔

.56

هَـٰذَا فَلۡيَذُوقُوهُ حَمِيمٌ۬ وَغَسَّاقٌ۬ 

یہ ہے(عذاب) ،اب اسکو چکھیں (بصورت) گرم پانی اور پیپ۔

.57

وَءَاخَرُ مِن شَكۡلِهِۦۤ أَزۡوَٲجٌ 

اور کچھ اسی شکل کا(اسکے علاوہ) ، طرح طرح کی (عذاب کی) چیزیں۔

.58

هَـٰذَا فَوۡجٌ۬ مُّقۡتَحِمٌ۬ مَّعَكُمۡ‌ۖ

یہ ایک فوج ہنستی آتی ہے تمہارے ساتھ،

لَا مَرۡحَبَۢا بِہِمۡ‌ۚ إِنَّہُمۡ صَالُواْ ٱلنَّارِ 

جگہ نہ ملیو (کوئی خوش آمدید نہ ملے) ان کو، یہ ہیں پیٹھے(جھلسنے والے) آگ میں۔

.59

قَالُواْ بَلۡ أَنتُمۡ لَا مَرۡحَبَۢا بِكُمۡ‌ۖ أَنتُمۡ قَدَّمۡتُمُوهُ لَنَا‌ۖ

وہ بولے، بلکہ تم ہی ہو، کہ جگہ نہ ملیو (کوئی خوش آمدید نہیں)تم کو، تم ہی پیش لائے ہمارے یہ بلا (انجام)۔

فَبِئۡسَ ٱلۡقَرَارُ 

سو کیا برا ٹھہراؤ ہے۔

.60

قَالُواْ رَبَّنَا مَن قَدَّمَ لَنَا هَـٰذَا فَزِدۡهُ عَذَابً۬ا ضِعۡفً۬ا فِى ٱلنَّارِ  

وہ بولے اے رب ہمارے جو کوئی ہمارے پیش لایا یہ، سو بڑھتی دے اسکو مار دُونی آگ میں۔

.61

وَقَالُواْ مَا لَنَا لَا نَرَىٰ رِجَالاً۬ كُنَّا نَعُدُّهُم مِّنَ ٱلۡأَشۡرَارِ 

 اور کہیں گے کیا ہوا کہ ہم نہیں دیکھتے کتنے مردوں کہ کہ ہم انکو گنتے تھے بُرے لوگوں میں۔

.62

أَتَّخَذۡنَـٰهُمۡ سِخۡرِيًّا أَمۡ زَاغَتۡ عَنۡہُمُ ٱلۡأَبۡصَـٰرُ

 کیا ہم نے ان کو ٹھٹھے (مذاق) میں پکڑا یا چُوک گئیں ان سے آنکھیں۔

.63

إِنَّ ذَٲلِكَ لَحَقٌّ۬ تَخَاصُمُ أَهۡلِ ٱلنَّارِ 

یہ بات ٹھیک ہونی ہے، جھگڑا آپس میں دوزخیوں کا۔

.64

قُلۡ إِنَّمَآ أَنَا۟ مُنذِرٌ۬‌ۖ

  تُو کہہ، میں تو یہی ہوں ڈر سنانے والا ،

وَمَا مِنۡ إِلَـٰهٍ إِلَّا ٱللَّهُ ٱلۡوَٲحِدُ ٱلۡقَهَّارُ 

اور حاکم کوئی نہیں مگر اﷲ اکیلا دباؤ والا۔

.65

رَبُّ ٱلسَّمَـٰوَٲتِ وَٱلۡأَرۡضِ وَمَا بَيۡنَہُمَا ٱلۡعَزِيزُ ٱلۡغَفَّـٰرُ 

 رب آسمانوں کا اور زمین کا، اور جو انکے بیچ ہے،زبردست گناہ بخشنے والا۔

.66

قُلۡ هُوَ نَبَؤٌاْ عَظِيمٌ 

  تُو کہہ، یہ ایک بڑی خبر ہے۔

.67

أَنتُمۡ عَنۡهُ مُعۡرِضُونَ 

  کہ تم اس کو دھیان میں نہیں لاتے۔

.68

مَا كَانَ لِىَ مِنۡ عِلۡمِۭ بِٱلۡمَلَإِ ٱلۡأَعۡلَىٰٓ إِذۡ يَخۡتَصِمُونَ 

 مجھ کو کچھ خبر نہ تھی اُوپر کی مجلس کی، جب آپس میں تکرار کرتے ہیں۔

.69

إِن يُوحَىٰٓ إِلَىَّ إِلَّآ أَنَّمَآ أَنَا۟ نَذِيرٌ۬ مُّبِينٌ 

مجھ کو تو یہی حکم آتا ہے، کہ اور نہیں میں ڈر سنانے والا ہوں کھول کر۔

.70

إِذۡ قَالَ رَبُّكَ لِلۡمَلَـٰٓٮِٕكَةِ إِنِّى خَـٰلِقُۢ بَشَرً۬ا مِّن طِينٍ۬ 

جب کہا تیرے رب نے فرشتوں کو، میں بناتا ہوں ایک انسان مٹی کا۔

.71

فَإِذَا سَوَّيۡتُهُ ۥ وَنَفَخۡتُ فِيهِ مِن رُّوحِى فَقَعُواْ لَهُ ۥ سَـٰجِدِينَ 

پھر جب ٹھیک بنا چکوں، اور پھونکوں اس میں ایک اپنی جان، تو تم گر پڑو اسکے آگے سجدے میں۔

.72

فَسَجَدَ ٱلۡمَلَـٰٓٮِٕكَةُ ڪُلُّهُمۡ أَجۡمَعُونَ

پھر سجدہ کیا فرشتوں نے سارے اکٹھے۔

.73

إِلَّآ إِبۡلِيسَ ٱسۡتَكۡبَرَ وَكَانَ مِنَ ٱلۡكَـٰفِرِينَ 

  مگر ابلیس (اس) نے غرور کیا اور تھا وہ منکروں میں۔

.74

قَالَ يَـٰٓإِبۡلِيسُ مَا مَنَعَكَ أَن تَسۡجُدَ لِمَا خَلَقۡتُ بِيَدَىَّ‌ۖ

فرمایا اے ابلیس! تجھ کو کیا اٹکاؤ ہوا کہ سجدہ کرے اس چیز کو جو میں نے بنائی اپنے ہاتھوں سے۔

أَسۡتَكۡبَرۡتَ أَمۡ كُنتَ مِنَ ٱلۡعَالِينَ 

یہ تُو نے غرور کیا، یا تُو بڑا تھا درجے میں۔

.75

قَالَ أَنَا۟ خَيۡرٌ۬ مِّنۡهُ‌ۖ

بولا میں بہتر ہوں اس سے،

خَلَقۡتَنِى مِن نَّارٍ۬ وَخَلَقۡتَهُ ۥ مِن طِينٍ۬ 

مجھ کو بنایا تُو نے آگ سے اور اس کو بنایا مٹی سے۔

.76

قَالَ فَٱخۡرُجۡ مِنۡہَا فَإِنَّكَ رَجِيمٌ۬ 

 فرمایا تُو نکل یہاں سے، کہ تُو مردود ہوا۔

.77

وَإِنَّ عَلَيۡكَ لَعۡنَتِىٓ إِلَىٰ يَوۡمِ ٱلدِّينِ 

 اور تجھ پر میری پھٹکار ہے اس جزا کے دن تک۔

.78

قَالَ رَبِّ فَأَنظِرۡنِىٓ إِلَىٰ يَوۡمِ يُبۡعَثُونَ 

بولا، تو اے رب! مجھ کو ڈھیل دے جس دن تک مردے جیئیں۔

.79

قَالَ فَإِنَّكَ مِنَ ٱلۡمُنظَرِينَ 

 فرمایا تجھ کو ڈھیل ہے۔

.80

إِلَىٰ يَوۡمِ ٱلۡوَقۡتِ ٱلۡمَعۡلُومِ   

 اسی وقت کے دن تک جو معلوم ہے۔

.81

قَالَ فَبِعِزَّتِكَ لَأُغۡوِيَنَّهُمۡ أَجۡمَعِينَ 

بولا تو قسم ہے تیری عزت کی! میں گمراہ کروں گا ان سب کو۔

.82

إِلَّا عِبَادَكَ مِنۡهُمُ ٱلۡمُخۡلَصِينَ 

 مگر جو بندے ہیں تیرے اُن میں چُنے۔

.83

قَالَ فَٱلۡحَقُّ وَٱلۡحَقَّ أَقُولُ 

فرمایا، تو ٹھیک (حق) بات یہ ہے اور میں ٹھیک (حق) ہی کہتا ہوں۔

.84

لَأَمۡلَأَنَّ جَهَنَّمَ مِنكَ وَمِمَّن تَبِعَكَ مِنۡہُمۡ أَجۡمَعِينَ 

 مجھ کو بھرنا دوزخ تجھ سے، اور جو ان میں تیری راہ چلے ان سے سارے۔

.85

قُلۡ مَآ أَسۡـَٔلُكُمۡ عَلَيۡهِ مِنۡ أَجۡرٍ۬ وَمَآ أَنَا۟ مِنَ ٱلۡمُتَكَلِّفِينَ 

تُو کہہ، میں مانگتا نہیں تم سے اس پر کچھ نیگ (اجر) ،اور میں نہیں آپ کو بنانے (بناوٹ کرنے) والا۔

.86

إِنۡ هُوَ إِلَّا ذِكۡرٌ۬ لِّلۡعَـٰلَمِينَ 

یہ تو ایک سمجھوتی (نصیحت) ہے سارے جہان والوں کو۔

.87

وَلَتَعۡلَمُنَّ نَبَأَهُ ۥ بَعۡدَ حِينِۭ 

 اور معلوم کر لو گے اس کا حال تھوڑی دیر کے پیچھے (بعد) ۔

*********

.88

Copy Rights:

Zahid Javed Rana, Abid Javed Rana, Lahore, Pakistan

Visits wef 2016

AmazingCounters.com